.

تونس میں قبرستان میں شادی کی تقریب پرعوام مشتعل، واقعے کی انکوائری شروع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تونس کی مشرقی گورنری المھدیہ میں ایک قبرستان میں شادی کی تقریب وائرل ہونے کے بعد عوامی اور مذہبی حلقوں میں شدید غم وغصے کی لہر دوڑ گئی ہے۔ دوسری طرف پراسیکیوٹر جنرل نے اس واقعے کو قبرستان کی بے حرمتی قرار دیتے ہوئے اس کی تحقیقات کا اعلان کیا ہے۔

خیال رہے کہ سوشل میڈیا پروائرل ہونے والی ایک ویڈیو میں دکھایا گیا ہے کہ لیبیا میں کچھ لوگ ایک قبرستان میں جمع ہیں اور شادی کے جشن کی تقریب میں ڈھول کی تھاپ پر رقص کررہے ہیں۔ اس ویڈٰو کے سامنے آنے کے بعد عوام میں اس کے خلاف غیرمسبوق احتجاج اور شدید غم وغصہ دیکھنے میں آیا ہے۔

فوٹیج میں خواتین کو قبرستان میں رقص کرتے اور گانے گاتے دیکھا جاسکتا ہے۔ یہ قبرستان المھدیہ گورنری میں برج الراس کے علاقے میں الولی الصالح سید جابر کے مقام پر پیش آیا۔

ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ لوگ قبرستان میں کرسیوں کےبجائے قبروں پر بیٹھے ہوئے ہیں۔

مقامی سماجی کارکن وسیلہ الحمامی نے اس ویڈیو پرتبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ قبرستان میں شادی کی تقریب منعقد کرنے کی اجازت کیسے دی جا سکتی ہے۔