.

اسرائیل : ابراہم معاہدوں کی توسیع کے لیے سپورٹ گروپ کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی پارلیمنٹ کے ارکان نے پیر کے روز ایک نئے منصوبے کا آغاز کیا ہے۔ اس منصوبے کا مقصد "ابراہم سمجھوتوں" کو آگے بڑھانا ہے۔ ان منصوبوں کا اعلان کئی عرب ممالک کی جانب سے کیا گیا تا کہ اسرائیل کے ساتھ معمول کے تعلقات قائم کیے جا سکیں۔ اس موقع پر سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی بیٹی ایوانکا ٹرمپ اور ان کے شوہر جیرڈ کشنر بھی موجود تھے۔

سابق امریکی صدر کے سینئر مشیر کے منصب پر کام کرنے والے کشنر نے ابراہم سمجھوتوں میں اہم کردار ادا کیا۔ اسرائیل نے یہ سمجھوتے متحدہ عرب امارات ، بحرین ، سوڈان اور مراکش کے ساتھ دستخط کیے۔

پیر کے روز "ابراہم سمجھوتوں" کے لیے سپورٹ گروپ کے آغاز پر کشنر نے اسرائیلی پارلیمنٹ میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ سمجھوتوں نے خطے میں "ایک نیا ماڈل" پیش کیا ہے۔

اس موقع پر اسرائیلی وزیر خارجہ یائر لیپیڈ نے کہا کہ وہ اپنے واشنگٹن کے آئندہ دورے میں "ابراہم سمجھوتوں" کا دائرہ کار وسیع کرنے کے لیے کوششیں کریں گے۔

گذشتہ ماہ امریکی وزیر خارجہ اینٹنی بلینکن نے اس عزم کا اظہار کیا تھا کہ وہ اسرائیل کو تسلیم کرنے کے لیے مزید عرب ممالک کی حوصلہ افزائی کریں گے تا کہ "تعلقات کے قیام کے راستے پر سفر جاری رہ سکے"۔

امریکی وزیر خارجہ آئندہ ہفتے اپنے اسرائیلی اور اماراتی ہم منصبوں سے ملاقات کریں گے۔ ملاقات میں ابراہم سمجھوتوں کے دستخظ کیے جانے کے بعد سے یقینی بنائی گئی پیش رفت کا جائزہ لیا جائے گا۔