کینیڈاکی پیٹرولیم کمپنی کالویلی نےیمنی صوبہ حضرموت میں سرگرمیاں معطل کردیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

کینیڈا کی کمپنی کالویلی پیٹرولیم نے سکیورٹی کی خراب صورت حال کے باعث یمن کے صوبہ حضرموت میں تیل کی تلاش اور نکالنے کی سرگرمیاں معطل کر دی ہے۔اس نے2019ء کے وسط میں جنگ زدہ ملک میں اپنی سرگرمیاں دوبارہ شروع کی تھیں۔

کمپنی نے اتوار کو ایک بیان میں17جنوری کو عملہ اور ٹھیکےداروں کو جاری کردہ نوٹس کی تصدیق کی ہے۔اس میں کمپنی کے گیٹ اور روڈ بلاکس کے باہر چیک پوسٹوں سے 14دسمبر سے پیداواراور نقل وحمل میں خلل کا حوالہ دیا گیا تھا۔اس کے پیش نظر اس نے بلاک 9 میں تیل نکالنے اور تلاش کی سرگرمیوں کو معطل کرنے کا اعلان کیا گیا تھا۔

فرم نے گذشتہ ہفتے رائٹرز کو ای میل کے ذریعہ دیے گئے جواب میں کہا تھا کہ’’کمپنی اس وقت تک اپنی پیداوار اور ترقیاتی سرگرمیاں دوبارہ شروع نہیں کرے گی جب تک سکیورٹی کے بگڑتے ہوئے حالات کا حل تلاش نہیں کرلیا جاتا‘‘۔

فیس بک پر مقامی حکام کے 25 جنوری کوپوسٹ کیے گئے خط کے مطابق یمن کے جنوبی صوبہ حضرموت میں قبائلیوں نے علاقے میں بجلی کی بندش، سرکاری شعبے کے ملازمین کی اجرتوں کی عدم ادائی اور تیل کی فروخت میں صوبے کے حصے سمیت متعدد امور پر احتجاجاً سڑکیں بند کردی تھیں۔

حضرموت بین الاقوامی طور پرتسلیم شدہ حکومت کے کنٹرول میں ہے۔صدرعبد ربہ منصور ہادی کے زیرقیادت اس حکومت کو عرب اتحاد کی حمایت حاصل ہے۔عرب اتحاد نے مارچ 2015 میں ایران کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کے خلاف فوجی مداخلت کی تھی۔حوثیوں کا اب بڑی حد تک ملک کے شمالی علاقوں پرکنٹرول کرتی ہے۔

سرکاری اعدادوشمار کے مطابق یمن قریباً 127,000 بیرل یومیہ (بی پی ڈی) تیل نکال رہا تھا لیکن جنگ نے توانائی کی یومیہ پیداوارکم کردی ہے اور وہ اب قریباً 60,000 بیرل یومیہ تیل نکال رہا ہے۔

واضح رہے کہ یمن میں لڑائی چھڑنے کے بعد دیگربین الاقوامی تیل فرموں کی طرح کالویلی نے بھی 2015 میں کام بند کردیا تھا لیکن اس نے جولائی 2019 میں بلاک 9 میں پیداواردوبارہ شروع کی تھی جہاں اس کا حصہ 50 فی صد ہے۔ابتدا میں اس نے 3500 بیرل یومیہ تیل نکالنا شروع کیا تھااورنومبر 2021 میں اس کی تیل کی یومیہ پیداواربڑھ کر 6700 بیرل ہوگئی تھی۔

فرم کے مطابق اس نے بلاک 9 میں تلاش کے نئے امکانات کے لیے تھری ڈی سیسمک پروگرام کا آغازکیا تھا۔اس میں مجموعی طور پرثابت شدہ اور ممکنہ ذخائرقریباً چار کروڑ 22 لاکھ بیرل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں