روس اور یوکرین

یوکرین میں روسی جنرل کا قتل، ماسکو کو ایک نیا دھچکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

گذشتہ فروری میں یوکرین میں روسی فوجی آپریشن کے آغاز کے بعد سے روسی فوج کو بڑے جانی نقصان اور کئی دھچکوں کا سامنا کرنا پڑا ہے، جن میں نمایاں طور پر یوکرین کی فوج کے ساتھ لڑائیوں اور مزاحمت کے دوران میدان جنگ میں سرکردہ جرنیلوں کی ہلاکت ہے۔

ماسکو کی طرف سے ہونے والی تازہ ترین ہلاکتوں میں روس کے سرکاری میڈیا نےاتوار کو اطلاع دی کہ مشرقی یوکرین میں ایک روسی جنرل ہلاک ہو گیا۔

ٹیلیگرام ایپ پر سرکاری ٹی وی کے نمائندے الیگزینڈر سلادکوف کی جانب سے شائع ہونے والی اس رپورٹ میں ڈونباس میں جنرل رومن کٹوزوف کے قتل کی تصدیق کی گئی ہے، تاہم یہ نہیں بتایا گیا کہ یہ قتل کب ہوا ہے۔

دوسری جانب روسی وزارت دفاع کی جانب سے ابھی تک کوئی تبصرہ سامنے نہیں آیا ہے۔

یہ امر قابل ذکر ہے کہ روسی حکام نے گذشتہ اپریل میں انکشاف کیا تھا کہ اب تک 8 اہم فوجی جنرل مارے جا چکے ہیں۔

روس فوجیوں کی ہلاکتوں کی تعداد کو ریاستی راز سمجھتا ہے اور اس نے 25 مارچ سے یوکرین میں اپنی تعداد کو اپ ڈیٹ نہیں کیا ہے۔ روس نے پہلے یہ تسلیم کیا تھا کہ فوجی مہم کے آغاز سے اب تک 1,351 روسی فوجی مارے جا چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں