برطانیہ کے شاہی تخت کے عاشق مزاج وارث شاہ چارلس کون ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

بل آف رائٹس 1689 اور کمپرومائز ایکٹ 1701 نے برطانیہ میں تخت کی جانشینی کو ہینوور کی صوفیہ کی جائز پروٹسٹنٹ اولاد تک محدود کر دیا جو "چرچ آف انگلینڈ کی پیروی کرتے ہیں۔سنہ 2015 میں قانون میں ترمیم ہونے تک رومن کیتھولک میاں بیوی کو 1689 سے خارج کر دیا گیا تھا۔ پروٹسٹنٹ کی اولاد رومن کیتھولک ہونے کی وجہ سے خارج کر دی گئی تھی وہ تخت کے لیے لائن میں رہنے کے حقدارنہیں رہے۔

ملکہ الزبتھ خود مختار رہیں اور ان کا ظاہری وارث ان کا بڑا بیٹا چارلس ’پرنس آف ویلز‘ ہی تھا۔ اس کے بعد پرنس ولیم ڈیوک آف کیمبرج، پرنس آف ویلز کا بڑا بیٹا ہے۔ درجہ بندی میں تیسرے نمبر پر ڈیوک آف کیمبرج کے بڑے بیٹے پرنس جارج ہیں۔ اس کے بعد ان کی بہن شہزادی شارلٹ اور ان کے چھوٹے بھائی پرنس لوئس ہیں۔ درجہ بندی میں چھٹے نمبر پر شہزادہ ہیری ہیں جو ڈیوک آف سسیکس ہیں اورپرنس آف ویلز کے سب سے چھوٹے بیٹے ہیں۔

سنہ 2015ء میں طے پانے والے پرتھ معاہدے کے تحت تخت کے لیے سب سے اوپر چھ افراد کو شادی سے پہلے بادشاہ کی رضامندی کی ضرورت ہوتی ہے۔ اس رضامندی کے بغیروہ اور ان کے بچے جانشینی کی صف سے باہر ہیں۔

جانشینی کی صف میں پہلے چار افراد جن کی عمر 21 سال سے زیادہ ہے اور ساتھ ہی بادشاہ کے ساتھی کو ریاستی مشیر کے طور پر مقرر کیا جا سکتا ہے۔ ریاستی مشیر برطانیہ میں بادشاہ کے کچھ فرائض انجام دیتے ہیں جب وہ بیرون ملک ہوتے ہیں یا عارضی طور پر نااہل ہوتے ہیں۔ دوسری صورت میں تخت کی قطار میں موجود افراد کو مخصوص قانونی یا سرکاری کردار ادا کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔

کنگ چارلس کون ہیں؟

چارلس 14 نومبر 1948 کو بکنگھم پیلس میں پیدا ہوئے۔ وہ ملکہ الزبتھ II کے بڑے بیٹے ہیں جو اس وقت ایڈنبرا کے ڈچس تھے اور ان کے شوہر پرنس فلپ ڈیوک آف ایڈنبرا اور کنگ جارج ششم اور ملکہ الزبتھ کے پہلے پوتے تھے۔ اسی سال 15 دسمبر کو بپتسمہ لیا جب وہ 3 سال کے تھے تو ان کے دادا کا انتقال ہوگیا اور اس کی ماں ملکہ بن گئیں اور وہ ولی عہد بن گیا۔

سنہ 1955 میں کلیرنس پیلس نے اعلان کیا کہ چارلس کو گھر پر نہیں بلکہ ایک اسکول میں تعلیم دی جائے گی اور اسے تخت کا پہلا وارث بنا کر شاہی محل سے باہر تعلیم حاصل کی جائے گی۔

اس کی تعلیم مغربی لندن میں ہوئی اور کوئی الگ سے خصوصی اہتمام نہیں کیا گیا۔

پھر مشرقی برکشائر میں اپنے والد کے پرانے اسکول میں چلے گئے اور پھر نارتھ ایسٹ اسکاٹ لینڈ چلے گئے۔ شہزادے نے کیمبرج کالج میں تعلیم مکمل کی۔

پرنس آف ویلز کی تاج پوشی 26 جولائی 1958 کو ایک ٹیلی ویژن تقریب میں ہوئی تھی۔ انہوں نے سرکاری تقریر انگریزی اور ویلش میں کی۔ شہزادہ دولت مشترکہ کے بعد ظاہر ہونے والا سب سے پرانا وارث ہے۔

سنہ 1981 میں چارلس نے ڈیانا کو شادی کی پیشکش کی۔ یہ پیشکش قبول کی گئی اور چارلس کی ڈیانا سے شادی ہوگئی۔ ان کے دو بیٹے ہوئے۔ 1982 میں ولیم اور 1984 میں ہنری اس دنیا میں آئے۔ کچھ عرصے بعد خوشگوار ازدواجی زندگی کی تصویر بدلنا شروع ہو گئی۔چارلس کو کیملا پارکر باؤلز کے ساتھ جذباتی لگاؤ ہوگیا حالانکہ وہ اس وقت شادی شدہ تھیں۔ 1992 میں چارلس اور ڈیانا کی علیحدگی کا اعلان کیا گیا اور 1996 میں ان کی طلاق ہوگئی اور 1997 میں ڈیانا کار حادثے میں چل بسیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں