ایران جوہری معاہدہ

آئی اے ای اے کے حکام جلدتہران کا دورہ کریں گے: جوہری سربراہ ایران

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ویانا میں قائم اقوام متحدہ کے تحت جوہری توانائی کے نگران ادارے (آئی اے ای اے)کے حکام آیندہ دنوں میں ایران کادورہ کریں گے۔

یہ بات بدھ کوایران کی جوہری توانائی تنظیم کے سربراہ محمداسلامی نے سرکاری ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہی ہے۔انھوں نے کہاکہ ایران میں غیرعلانیہ مقامات پر پائے جانے والے یورینیم کے ذرّات پر تعطل کو ختم کرنے کی کوشش کی جائے گی۔

انھوں نے اس امیدکا اظہارکیا ہے کہ جوہری توانائی کے بین الاقوامی ادارے کے حکام کے تہران کے دورے سے متنازع مسائل کو حل کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔

امریکا کے سابق صدرڈونلڈ ٹرمپ 2018 میں 2015ء میں طے شدہ جوہری معاہدے سے دستبردار ہوگئے تھے۔انھوں نے ایران پرپابندیاں عاید کردی تھیں۔اس کے ردعمل میں ایران نے یورینیم افزودگی کی سرگرمیوں کو تیز کردیا تھا۔ایران کی یہ مشتبہ سرگرمیاں2015ء میں طے شدہ جوہری سمجھوتے کی بحالی کے لیے وسیع ترمذاکرات میں کسی مثبت پیش رفت کی راہ میں رکاوٹ بن چکی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں