کیا امریکی صدر اور ان کی نائب صدر کے تعلقات میں تناؤ ہے؟

امریکی انتظامیہ کے عہدیداروں نے کملا ہیرس کی کارکردگی پر تنقید کی اور الزام لگایا وہ اس عہدہ کی صلاحیتوں کی حامل نہیں ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

ایک مرتبہ پھر امریکی صدر بائیڈن کی اپنی نائب صدر کملا ہیرس سے ناراض ہونے کی اطلاعات سامنے آئی ہیں اور کہا گیا ہے کہ بائیڈن اپنی نائب کملا ہیرس سے مایوس ہیں۔ برطانوی اخبار "ڈیلی ایکسپریس" کے مطابق بائیڈن کا خیال ہے کہ کملا ہیریس کا معاملات کو سنبھالنے کا انداز اس عہدہ کی ضرورت کی بلندی تک نہیں پہنچ پاتا۔

اخبار نے کہا ہے کہ تقریباً کچھ توقعات کے باوجود کہ کملا ہیرس اگلے سال نئی صدارتی مدت کے لیے ہونے والے انتخابات میں بائیڈن کے ساتھ حصہ نہیں لیں گی کچھ ڈیموکریٹس نے کملا سے بائیڈن کی ناراضی کو بیان کرنا ضروری سمجھا ہے۔ یہ تنقید اس اس بڑی کوشش کے باوجود سامنے آئی ہے جس میں بائیڈن اپنے تمام حالیہ عوامی بیانات میں اپنے نائب کی تعریف کی ہے۔

تاہم وائٹ ہاؤس کے قریبی لوگوں نے دعویٰ کیا ہے کہ بائیڈن کے اپنے نائب سے پریشان ہونے کی وجہ زیادہ حساس اور خطرناک معاملات کو سنبھالنے میں کملا کی نااہلی ہے۔

ایک سابق امریکی اہلکار نے "رائٹرز" کو بتایا کہ صدر اور ان کے نائب صدر کے درمیان تناؤ کی وجہ مؤخر الذکر کی مسائل میں بائیڈن کی مدد کرنے میں ناکامی ہے۔ کملا ناکامی کے خوف سے بائیڈن کی مدد کرنے سے گریز کرتی ہیں۔ ایک اور عہدیدار نے کہا اگر بائیڈن کیا خیال تھا کہ اس وہ قابل نہیں ہیں تو پھر انہوں نے کملا کو اپنا نائب کیوں منتخب کیا؟ ہمیشہ اس بات پر بات ہوتی ہے کہ کملا اس عہدہ کے حوالے سے کتنی بلندی پر ہیں۔ مجھے لگتا ہے دوبارہ صدارتی الیکشن کی امیدواری کی بات کملا ہیرس سے زیادہ بائیڈن سے متعلق ہے۔

تاہم بند دروازوں کے پیچھے جو کچھ کہا جارہا ہے اس کے باوجود بائیڈن نے اپنی نائب صدر کے لئے تعریفیں جاری رکھی ہیں۔ گزشتہ بدھ کو ’’ خواتین کی تاریخ کا مہینہ‘‘ منانے کے حوالے سے ایک تقریب میں بائیڈن نے کملا ہیرس کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ’’ جیسا کہ آپ جانتی ہیں، حیرت انگیز نائب صدر، آپ نے زیادہ تر اپنے طور پر ہی بہت سے رکاوٹیں توڑ دی ہیں‘‘

انہوں نے مزید کہا سان فرانسسکو میں پہلی خاتون ڈسٹرکٹ اٹارنی اور ریاست کیلیفورنیا کی پہلی خاتون اٹارنی جنرل کے طور پر ڈوگ (کملا ہیرس کے شوہر) اس تاریخی پیش قدمی میں آپ کے ایک شاندار ساتھی تھے۔

گزشتہ جمعرات کو صدر بائیڈن نے سابق صدر براک اوباما کے بنائے گئے ہیلتھ کیئر ریفارم قانون کی 13 ویں سالگرہ منانے کے لیے ایک تقریب کے دوران بھی ہیرس کا شکریہ بھی ادا کیا۔

"ڈیلی ایکسپریس" کے مطابق یہ پہلی مرتبہ نہیں ہے کہ بائیڈن اور ہیرس کے درمیان کشیدگی کی خبریں سامنے آئی ہیں ۔ ’’دی فائٹ آف ہز لائف‘‘ کے عنوان سے ایک کتاب میں مصنف کرس وہپل نے کہا ہے کہ نائب صدر پر تنقید اب بھی جاری ہے۔ صدر بائیڈن کملا ہیرس کے شوہر ڈگلس ایمہوف سے ناراض ہیں جو کملا کے فرائض کے حوالے سے شکایت کرتے ہیں۔

کتاب "بائیڈن پریشان ہیں" میں کہا گیا ہے کہ بائیڈن نے کبھی ہیرس سے ایسا کچھ کرنے کو نہیں کہا جو انہوں نے خود نائب صدر رہنے کے وقت نہیں کیا تھا۔

اسی تناظر میں ہیرس کو کارکردگی کے حوالے سے ایک اور دھچکے کا اس وقت سامنا کرنا پڑا جب مونماؤتھ یونیورسٹی کی جانب سے اس ماہ کرائے گئے ایک رائے عامہ کے سروے میں بتایا گیا کہ 748 رجسٹرڈ ووٹرز میں سے 5 فیصد ہیریس کی کارکردگی سے متفق نہیں ہیں اور صرف 37 فیصد جواب دہندگان نے ہیرس کی حمایت کی۔

یہ اعداد و شمار اس سے بہتر نہیں تھے جو گزشتہ جنوری میں پچھلے سروے میں بتائے گئے تھے۔ اس سروے میں ایک ہزار افراد شامل تھے۔ رائے دہندگان میں سے صرف 29 فیصد نے اس وقت نائب صدر کی حمایت کی تھی اور 57 فیصد نے ان کی کارکردگی پر تنقید کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں