امریکی صدر کو انٹرویو خاتمے کی عجلت کیوں تھی؟ بائیڈن کا رویہ مذاق بن گیا: ویڈیو

جو بائیڈن ٹی وی انٹرویو ختم ہونے سے پہلےاٹھ کر چلے گئے، نشریات روکنا پڑیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی صدر جو بائیڈن اپنی پیرانہ سالی کی وجہ سے اکثر ایسی حرکات کر گذرتے ہیں جو ان کے صدارتی اقدامات سے زیادہ ان کی انوکھی حرکتیں توجہ کا مرکز رہتی ہیں۔

حال ہی میں ایک ٹی وی انٹرویو میں صدر جو بائیڈن نے روایتی عجلت کا مظاہرہ کرتے ہوئے انٹرویو کے اختتام کے پروٹوکول کا خیال رکھے بغیر سٹوڈیو چھوڑ کر سوشل میڈیا پر ایک نیا موضوع بحث کے لیے چھوڑ دیا۔

امریکی صدر جو بائیڈن نے MSNBC ٹی وی نیٹ ورک کے ساتھ اپنے انٹرویو کے دوران عجیب رویے کا اظہار کرتے ہوئے انٹرویو ختم ہونے کے ساتھ ہی اٹھ کر چلے گئے اور ان کے انٹرویو کی نشریات روکنا پڑیں۔

عام طور پر ہوتا یہ ہے کہ کسی بھی انٹرویو میں مہمان کو اس وقت تک اپنی نشتپ بیٹھنا ہوتا ہے جب اینکر اختتامی الفاظ نہ بول دے۔ اس انٹرویو میں ایسا نہیں ہوا۔ خاتون اینکر شکریے کے الفاظ ادا کرتی رہی اور صدر صاحب اٹھ کر چلتا بنے۔

براہ راست نشر ہونے والی فوٹیج میں انٹرویو کے اختتام پر ان کے عجیب وغریب رویے کو دکھایا گیا ہے۔ یہ انٹرویو تقریباً 20 منٹ تک جاری رہا۔

اینکر نکول والیس نے ایک اختتامی جملے کے ساتھ میٹنگ کا اختتام کیا جب بائیڈن فوٹو اسٹوڈیو میں ان کے پیچھے جا رہے تھے۔

ٹی وی اینکر نے ناظرین کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ"دور مت جاؤ" جب کہ بائیڈن اس کے پیچھے پیچھے چلے گئے۔

ٹی وی کا مہمان عام طور پر اپنی نشست چھوڑنے سے پہلے نشریات کے منقطع ہونے تک انتظار کرتا ہے، لیکن بائیڈن جیسے ہی جلدی میں سوالات ختم ہو گئے وہاں سے چلے گئے۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی اس ویڈیو میں امریکیوں میں امریکی صدر کا بھرپور مذاق اڑایا ہے۔ سابق ریپبلکن گورنر سکاٹ واکر نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ ویڈیو کو دیکھ کر صدر بائیڈن کی صدارت کا اندازہ لگا لینا چاہیے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں