سکیورٹی عملہ بے خبر، دو امریکی سیاح رات بھر ایفل ٹاور میں سوئےرہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پیرس کے ایفل ٹاور میں پیر کی صبح دو امریکی سیاح سوتے ہوئے پائے گئے جہاں وہ اتوار سے چھپے ہوئے تھے۔ ’اے ایف پی‘ کی طرف سے اطلاع دی گئی کہ سکیورٹی عملے کو ان سیاحوں کی موجودگی کا پتا نہیں چلا۔

ایفل ٹاور کو چلانے والی کمپنی کے سکیورٹی اہلکاروں کے دورے کے دوران صبح نو بجے سائٹ کو عوام کے لیے کھولنے سے پہلے دونوں سیاحوں کو "صبح سویرے"سوتے پایا گیا۔ دونوں سیاح ٹاور کی دوسری اور تیسری منزل کے درمیان تھے۔ اس حصے میں عوام کی رسائی نہیں تھی۔

مشہور پیرس لینڈ مارک کو چلانے والی کمپنی نے بتایا کہ دونوں سیاحوں کسی قسم کا خطرہ نہیں تھے۔

پولیس ذرائع کے مطابق انہوں نے اپنے اتوار کے داخلے کا ٹکٹ تقریباً 22:40 پر ادا کیا اور سیڑھیاں اترتے ہوئے رکاوٹوں کو عبور کیا۔

پیرس میں پبلک پراسیکیوشن آفس نے کہا کہ دونوں سیاح اس جگہ میں پھنس گئے کیونکہ وہ نشے میں تھے۔"

ان دونوں افراد کو پوچھ گچھ کے لیے پیرس کے سیونتھ آرونڈیسمنٹ پولیس اسٹیشن لے جایا گیا۔

ٹاور کو چلانے والی کمپنی نے "موجودہ ہفتے کے دوران" ان کے خلاف شکایت درج کرنے کا ارادہ ظاہر کیا۔

ایفل ٹاور معمول سے ایک گھنٹہ بعد پیر کی صبح تقریباً 10 بجے عوام کے لیے دوبارہ کھولا گیا۔

سیاحوں کے استقبال میں یہ نئی پریشانی دو جھوٹی بم دھمکیوں کی وجہ سے ہفتے کے روز ایفل ٹاور سے دو بار زائرین کے انخلاء کے بعد سامنے آئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں