عدالت نے روبیلز کو جنسی زیادتی کا مجرم قرار دینے کے لیے 'بوسے' کی ویڈیو مانگ لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پیر کے روز ہسپانوی قومی عدالت نے لوئس روبیلز کے خلاف پبلک پراسیکیوشن کی طرف سے جمع کرائی گئی شکایت کی روشنی میں اس کے خلاف مقدمہ کی کارروائی کی منظوری دی ہے۔ روبیلز پر الزام ہے کہ انہوں نے خواتین کے عالمی کپ کا ٹائٹل جیتنے کے بعد ہسپانوی قومی ٹیم کی کھلاڑی جینی ہرموسو کو بوسہ دے دیا تھا جو ایک اسکینڈل کی شکل اختیار کرگیا اور روبیلز کو ہسپانوی فٹ بال فیڈریشن کے صدر کے عہدے سے استعفیٰ دینا پڑا تھا۔

’سی این این‘ نے اپنی ویب سائٹ پر شائع ہونے والی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ "عدالت نے پیر کو جاری کردہ ایک پریس بیان کے مطابق، جنسی زیادتی اور جبر کے الزامات کے تحت روبیلز کے خلاف دائر کی گئی شکایت کو قبول کر لیا۔"

رپورٹ کے مطابق "عدالت نے تحقیقات کے لیے شاٹ کی ویڈیوز پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔ عدالت شواہد اکٹھا کرنا شروع کرے گی فٹ بال فیڈریشن کے برطرف صدر روبیلز کے خلاف ممکنہ الزامات کے تحت مقدمہ چلایا جا سکے۔

پریس ریلیز کے مطابق عدالت نے اس طریقہ کار کے پہلے اقدامات کی منظوری دے دی ہے۔ ٹائٹل دیے جانے کی تقریب، لاکر روم اور ٹیم بس میں ہونے والی تقریبات کی ویڈیو مانگی ہے۔

جمعے کے روزہسپانوی پبلک پراسیکیوٹر نے روبیلز کے خلاف شکایت درج کرائی، جب کھلاڑی ہرموسو نے پبلک پراسیکیوشن میں سرکاری شکایت درج کرائی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں