مصرمیں نوجوان نےسابق منگیتر کو صلح نہ کرنے پر گولی مار کر قتل کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

مصرمیں ایک نوجوان نے سرعام اپنی سابق منگیتر اور معشوقہ کو گولیاں مار کر قتل کردیا۔ اس خونی واقعے کے بعد چند ماہ قبل پیش آنے والے نیرہ اشرف قتل کیس نے اپنی یاد تازہ کردی۔

نیرہ اشرف کے قاتل نے اسے یونیورسٹی کے گیٹ کے سامنے ذبح کر کے قتل کردیا تھا جس پر ملک بھرمیں شدید غم وغصے کی لہر دوڑ گئی تھی۔

دارالحکومت قاہرہ کے مشرق میں واقع نصر سٹی میں عبور بلڈنگز کے علاقے میں سڑک پر کل منگل کی شام کو ایک نوجوان نے راہ چلتی ایک لڑکی پر گولی چلا دی جس کے نتیجے میں اس کی موقت واقع ہوگئی۔

قاہرہ کی سکیورٹی سروسز کو واقعے کی اطلاع موصول ہوئی جب کہ عینی شاہدین نے بتایا کہ جب لڑکی کام سے جا رہی تھی تو ایک نوجوان نے اسے روکا جس کے بعد دونوں کے درمیان جھگڑا ہوا۔ س کے بعد اس نے اسے گولی مار دی۔

تحقیقات سے معلوم ہوا کہ 26سالہ علی نامی نوجوان کا لڑکی سےمحبت کرتا تھا جب کہ مقتولہ کی شناخت 24سالہ شیماء کے نام سے کی گئی ہے۔ ان کی برسوں سے منگنی بھی ہوئی تھی لیکن دونوں کے درمیان ناچاقی کے باعث لڑکی نے علیحدگی کا فیصلہ کیا اور منگنی توڑ دی تھی

ملزم نے سابقہ منگیتر کے ساتھ تعلقات معمول پر لانے کی کوشش کی مگر اس کے خاندان نے اس کی سختی سے مخالفت کی تھی۔

تفتیش میں مزید بتایا گیا کہ ملزم نوجوان نے اپنی سابقہ منگیتر کے کام سے چھٹی کے بعد اس کے سفر کے راستے پر اس کی ریکی کی۔ جب وہ اس کے قریب پہنچی تو پہلے اس نے اسے روک کر تعلقات بحال کرنے کا کہا لیکن اس کے انکار پر اس نے راہ گیروں کے سامنے اسے گولی مار کر قتل کردیا۔

رہائشیوں نے نوجوان کو پکڑ لیا جس نے انہیں گولی مارنے کی کوشش کی، تاہم انہوں نے ملزم کو دبوچ لیا اور اس کی گولی سے ایک شخص زخمی بھی ہوا۔اتنے میں پولیس نے موقعے پر پہنچ کر ملزم کو گرفتار کرلیا۔

خیال رہے کہ مصرمیں گذشتہ کچھ عرص سے نوجوان لڑکوں کے ہاتھوں لڑکیوں کے قتل کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔

چند ہفتے قبل بور سعید شہر میں ایک نوجوان نے راہ گیروں کے موجودگی میں ایک لڑکی کو راہ چلتے روکا، اسے تشدد کا نشانہ بنایا اور اس کے بعد اس کا گلا دبا کو اسے جان سے مار دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں