طیب ایردوآن اور پوپ فرانسس کا غزہ بارے تبادلہ خیال ، پوپ کا دوریاستی حل پر زور

صدر ترکیہ نے غزہ میں فلسطینیوں کے قتل عام پر عالمی خاموشی کو انسانیت کے لیے شرمناک قرار دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ترکیہ کے صدر طیب ایردوآن اور مسیحی پوپ فرانسس نے فون پر غزہ کی صورت حال کے بارے میں تبادلہ خیال کیا ہے۔ اس فون کال کے لیے طیب ایردوآن نے درخواست کی تھی تاکہ فلسطین کی ارض مقدس کے بارے میں بات کر سکیں۔

پوپ نے جمعرات کے روز ترکیہ کے صدرسے فون پر اسرائیل اور حماس کے درمیان جاری جنگ پر بات چیت کی۔

پوپ فرانسس نے اس موقع پر مسئلہ فلسطین کے حل کے لیے دوریاستی حل پر زور دیا۔ یہ بات ویٹیکن سٹی کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہی گئی ہے۔

پوپ نے غزہ کے حالات پر افسوس کا اظہار کیا۔ تاہم انہوں نے امید ظاہر کی کہ دوریاستی حل اور یروشلم کے خصوصی سٹیٹس کے حق میں فیصلہ ہو گا۔

ترکیہ کے ایوان صدر کی طرف سے غزہ پر اسرائیلی حملوں اور بمباری کو فلسطینیوں کا قتل عام قرار دیا۔ ایردوآن نے بین الاقوامی برادری سے مطالبہ کیا کہ غزہ میں جاری صورت حال پرخاموش نہ رہے کہ یہ خاموشی انسانیت کے لیے شرمناک ہے۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں