سوڈان میں ’آر ایس ایف‘ پر مواصلاتی خلل ڈالنے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

کل سوموار کو سوڈان کے بیشتر علاقوں میں مواصلاتی رابطوں میں خلل کی وجہ سے شہریوں کو ایک نئی پریشانی میں ڈال دیا۔

مواصلاتی شعبے کے دو ذرائع اور سوڈان نیوز ایجنسی کا خیال ہے کہ یہ خرابی ریپڈ سپورٹ فورسز کا ایک دانستہ اقدام ہے جس کہ وجہ سے ملک کے کئی علاقوں میں مواصلاتی نظام معطل ہوگیا۔

ریپڈ سپورٹ فورسز نے سرکاری طور پر ان الزامات پر کوئی تبصرہ نہیں کیا، لیکن ایک ذریعے نے رائٹرز کو بتایا کہ نیم فوجی دستوں کا مواصلاتی بندش سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

بہت سے سوڈانی باشندوں نے کہا کہ وہ اپنے خاندان کے افراد تک رابطپ نہیں کرسکتے۔

سوڈانی فوج اور ریپڈ سپورٹ فورسز [آر ایس ایف] کے درمیان جنگ کے اثرات بڑھتے جا رہے ہیں۔ خانہ جنگی کی وجہ سے 7.5 ملین سے زیادہ لوگوں کو اپنے گھروں سے نقل مکانی پر مجبور ہونا پڑا ہے اور قحط کی کی صورت حال ہے۔

لاکھوں لوگ خوراک اور دیگر ضروریات خریدنے کے لیے آن لائن ادائیگیوں پر انحصار کرتے ہیں جو نیٹ ورک میں خلل کی وجہ سے اب ناقابل رسائی ہیں۔

انٹرنیٹ کی نگرانی کرنے والی تنظیم نیٹ بلاکس نے اتوار کو "ایکس" پلیٹ فارم پر ڈیٹا شائع کیا، جس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ دو بڑے سروس فراہم کنندگان ہیں اتوار کو صفر سروس فراہم کررہے تھے۔

سوڈان نیوز ایجنسی (SUNA) اور مواصلات کے شعبے سے تعلق رکھنے والے دو ذرائع نے رائٹرز کو بتایا کہ ریپڈ سپورٹ فورسز نے سروس فراہم کرنے والوں کے ساتھ رابطے منقطع کر دیے اور مطالبہ کیا کہ مغربی علاقے دارفور میں نیٹ ورک کی بندش کو ٹھیک کیا جائے، جہاں بڑی حد تک اس کا کنٹرول ہے۔

یہ فوری طور پر واضح نہیں ہوسکا کہ دارفر میں بندش کی وجہ کیا ہے۔ ریپڈ سپورٹ فورسز کے ذریعہ نے دارفور میں مواصلاتی بندش کی ذمہ داری فوج پر ڈالتے ہوئے کہا کہ اس نے وہاں اور دیگر علاقوں میں مہینوں تک مواصلاتی بندش کا حکم دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں