’آئیے اپنے اختلافات کو ذمہ داری سے سلجھائیں‘:بلنکن کا چین سے پیغام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی وزیرخارجہ انٹونی بلنکن نے اپنے دورہ چین کے موقعے پر بیجنگ میں کہا ہے کہ وہ چین کے ساتھ دو طرفہ امور کے حل کے لیے کوشش کررہے ہیں۔ انہوں آج جمعرات کو بیجنگ پہنچنے پر کہاکہ وہ چین اور امریکہ کےدرمیان ختلافات کو "ذمہ داری سے" حل کرنے کے خواہاں ہیں۔

بیجنگ میں سینیر حکام کے ساتھ اپنی ملاقات سے ایک دن پہلے بلنکن نے شنگھائی شہر کا دورہ کیا جہاں وہ مقامی کھانوں سے لطف اندوز ہوئے، باسکٹ بال کا کھیل دیکھا اور دریائے ہوانگپو کے مغربی کنارے کے ساتھ مشہور بند علاقے میں چہل قدمی کی۔

اختلافات حل کرنے پر زور

شہرمیں کمیونسٹ پارٹی کے رہ نما سےملاقات کے دوران انٹونی بلنکن نے زور دیا کہ امریکی صدر جو بائیڈن برسوں سے بڑھتی ہوئی کشیدگی کے بعد دنیا کی دو بڑی معیشتوں کے درمیان براہ راست اور پائیدار بات چیت کے لیے پرعزم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ "میرے خیال میں یہ ضروری ہے کہ براہ راست شرکت کی ضرورت پر زور دیا جائے اور ایک دوسرے سے بات کی جائے، اپنے اختلافات کو واضح کیا جائے، جو کہ حقیقی ہیں، اور انہیں سمجھنے کی کوشش کی جائے"۔

بلنکن شنگھائی میں ایک میچ دیکھ رہا ہے
بلنکن شنگھائی میں ایک میچ دیکھ رہا ہے

انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کی قیادت کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے عوام اور دنیا کے ساتھ مل کر دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو ذمہ داری سے سنبھالیں۔

دوسری جانب شنگھائی میں چینی کمیونسٹ پارٹی کے سیکرٹری چن جننگ نے امریکی مہمان کا خیر مقدم کیا اور شہر میں امریکی کمپنیوں کےکام کی اہمیت پر زور دیا۔

انہوں نے بلنکن سے مخاطب ہوکر کہا کہ "چاہے ہم تعاون کا انتخاب کریں یا تصادم کا۔ اس سے دونوں ملکوں کے عوام دونوں ملکوں کی بھلائی اور انسانیت کے مستقبل پر اثر پڑتا ہے"۔

شنگھائی کے ایک ریستوراں میں بلنکن
شنگھائی کے ایک ریستوراں میں بلنکن

شنگھائی ملک کا مالیاتی دارالحکومت جو چین میں اقتدار حاصل کرنے کا نقطہ آغاز ہے، کیونکہ صدر شی جن پنگ نے اس سے قبل اس شہر میں ذمہ داریاں سنبھالی تھیں۔

چین نے شی کے ساتھ بلنکن کی ملاقات کی تاریخ کا اعلان نہیں کیا ہے، حالانکہ سابقہ دورے میں ان کی ملاقات ہوئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں