.

جان کیری کا اسرائیل کیلیے ایک اور شٹل ڈپلومیسی مشن

یہ وقت امن مذاکرات کیلیے بڑا اہم ہے: جین پاسکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزیر خارجہ جان کیری مشرق وسطی کے دورے کی پھر تیاری میں مصروف ہیں۔ اسرائیل اور فلسطین کے امن مذاکرات کی الجھتی ڈوری کو سلجھانے کیلیے بدھ کے روز دوبارہ روانہ ہوں گے۔

امریکی دفتر خارجہ کے مطابق وہ پانچ دن کے وقفے سے دوبارہ شٹل ڈپلومیسی شروع کر رہے ہیں۔ امریکی دفتر خارجہ کی ترجمان جین پاسکی نے اس بارے میں بات کرتے ہوئے کہا'' امن مذاکرات کیلیے یہ ایک اہم وقت ہےاس لیے وزیر خارجہ دوبارہ اسرائیل جا رہے ہیں۔''

واضح رہے امریکی وزیر خارجہ جنہوں نے محض چند روز قبل اسرائیلی وزیر اعظم سے ایک سے زاِئد ملاقاتیں کیں اور فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمودعباس سے بھی تین گھنٹوں سے طویل ملاقات کی ہے، اب کی بار مزید دو دن کیلیے یروشلم اور رام اللہ میں ملاقاتیں کریں گے۔

امریکی ترجمان جین پاسکی نے اس تاثر کی تردید کی کہ امریکی انتظامیہ ایک ہمہ گیر معاہدے کے بجائے عبوری بندوبست کو ترجیح دے رہی ہے۔ جین پاسکی کے مطابق '' یہ واضح رہنا چاہیے کہ ہم کسی عبوری سمجھوتے کیلیے کوشاں نہیں ہیں، ہم ایک حتمی معاہدہ چاہتے ہیں۔''

پاسکی نے واضح کیا کہ رواں سال کے شروع میں طے ہونے والے ٹائم فریم میں بھی تبدیلی کی تجویز نہیں ان کا کہنا تھا ''تمام فریق نو ماہ میں ایک معاہدے تک پہنچنے کے نظام الاوقات پر متفق ہیں۔''

جین پاسکی کے بقول کیری نے پیر کے روز اسرائیلی مذاکرات کار زپی لیونی اور فلسطینی نمائندے صائب عریکات سے ملاقاتیں کی ہیں۔

امریکی وزیر خارجہ جان کیری جب سے وزیر خارجہ بنے ہیں اسرائیل میں ان کا نوواں دورہ ہو گا جس میں وہ رات بھی اسرائیل میں گذاریں گے۔

جان کیری کے اس فوری دورے کے فیصلے سے محض ایک روز قبل ایک فلسطینی ذمہ دار نے جان کیری کی سلامتی سے متعلق تجاویز کو ناکامی کی طرف لے جانے والی قرار دیا تھا۔