.

فلسطینیوں کیلیے خوراک لانے والا ایرانی بحری جہاز اسرائیل نے روک دیا

اسرائیل نے جہاز کے ذریعے اسلحہ لانے کا الزام لگا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی فوج نے غزہ کیلیے بنیادی اشیائے ضروریہ ، خوراک اور ادویات لے جانے والے ایرانی بحری جہاز کو یہ کہہ کر غزہ کے زیر محاصرہ فلسطینیوں کی مدد کو پہنچنے سے روک دیا ہے۔ اسرائیلی فوج نے الزام عاید کیا ہے کہ ایرانی جہاز فلسطینیوں کیلیے جدید اسلحہ لے کر جا رہا تھا۔

معلوم ہوا ہے کہ اشیائے ضروریہ سے لدا یہ ایرانی جہاز بدھ کے روز ابھی سوڈان کے قریب سمندر میں پہنچا تھا کہ اسے اسرائیلی فورسز نے زبردستی روک دیا۔ ایک عالمی خبر رساں کے مطابق اسرائیلی فوج نے اس بارے میں ایک بیان بھی جاری کر دیا ہے۔

اس جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ فوج نے آج ایران کے ایک سمگلنگ کرنے والے بحری جہاز کو روک دیا ہے۔ یہ جہاز غزہ میں سرگرم دہشت گرد تنظیم کو دینے کیلیے جدید ترین اسلحہ لے کر آرہا تھا۔ واضح رہے چند برس پہلے ترکی کے ایسے ہی ایک جہاز فلوٹیلا پر اسرائیلی فورسز نے حملہ کر دیا تھا جس کئی ہلاکتیں بھی ہوئی تھیں۔ فلوٹیلا اسرائیلی ناکہ بندی کا شکار غزہ کے باسیوں کی بنیادی ضروریات کیلیے اشیائے خوردو نوش، ادویات شامل تھیں۔

واضح رہے غزہ کی ناکہ بندی اسرائیل نے تقریبا چھ برس قبل کی تھی جو آج بھی جاری ہے۔ مصر کی عبوری حکومت نے بھی رفح کی راہداری بند کر دی ہے۔