.

خلیج سفارتی بحران حل کے لیے امریکی ثالثی کی کوشش

جان کیری اور امیر قطر کے درمیان الجزائر میں ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا نے تین خلیجی ریاستوں متحدہ عرب امارات، سعودی عرب اور بحرین کے قطر کے ساتھ سفارتی تنازع کے حل کے لیے کوششیں شروع کر دی ہیں۔ اس سلسلے میں امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے الجزائر میں امیر قطر الشیخ تمیم بن حمد آل ثانی سے ملاقات بھی کی ہے، جس میں دوحہ کے دوسرے خلیجی ملکوں کے ساتھ پیدا ہونے والے سفارتی تنازع کے حل پر تبادلہ خیال ہوا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق الجیرین وزیر خارجہ رمضان لمعامرہ نے ایک انٹرویو میں بتایا کہ ہمیں امیر قطر اور امریکی وزیرخارجہ کے درمیان ملاقات کا علم تھا۔ اس لیے ہم نے اس موقع کو غنیمت سمجھا دونوں ملکوں [امریکا، قطر] کے درمیان اچھے سفارتی مراسم کو سامنے رکھتے ہوئے اس ملاقات کا بھرپور اہتمام کیا۔ جان کیری اور امیر قطر کے درمیان ہونے والی بات چیت میں سعودی عرب کے ساتھ دوحہ کے اختلافات کم کرنے کے طریقہ کار پر غور کیا گیا۔

الجیرین وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ ان کا ملک خلیجی ممالک کے درمیان پیدا ہونے والے سفارتی تنازع کو ختم کرنے کا خواہاں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس میٹنگ میں نہیں تھے کیونکہ یہ صرف امریکا اور قطر کے درمیان تھی، تاہم میٹنگ اس بات کی دلیل ہے کہ الجزائر خلیجی ممالک کے سفارتی تنازع کے حل کو کتنی اہمیت دیتا ہے"۔

وزیر خارجہ رمضان لمعامرہ کا کہنا تھا کہ ہم مصر کے اندرونی معاملات میں مداخلت نہیں کر رہے ہیں بلکہ ہماری خواہش ہے کہ قاہرہ افریقی یونین میں واپسی کا خواہاں ہے۔انہوں نے فیلڈ مارشل عبدالفتاح السیسی کے صدارتی انتخابات میں حصہ لینے اعلان پر تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا۔

الجیرین وزیر خارجہ کا یہ انٹرویو ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب ملک میں صدارتی انتخابات کے لیے کل ہفتے کے روز بیرون ملک مقیم 19 لاکھ شہری اپنا حق رائے استعمال کر رہے ہیں۔ اس مقصد کے لیے الجزائر کے مختلف ملکوں میں قائم قونصل خانوں اور سفارت خانوں میں 398 پولنگ مراکز قائم کیے گئے ہیں۔