.

داعش عراقی شہر کرکوک اور صلاح الدین پہنچ گئے

سیکیورٹی کی ابتر صورتحال کے پیش نظر علاقے میں کرفیو کا نفاذ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق سے العربیہ کے نامہ نگار کے مراسلے کے مطابق صلاح الدین گورنری سے عراقی فوج کے انخلاء کے بعد شہر دو سمتوں سلیمان بیک اور الصینیہ پر القاعدہ نواز مسلح تنظیم داعش کا قبضہ ہو گیا ہے جبکہ شمالی عراق کے شہر کرکوک سے سرکاری فوج کے انخلاء کے بعد الزاب اور العباسی کے علاقے دہشت گردوں کے مکمل کنڑول میں آ گئے ہیں۔

تادم تحریر الرشاد اور الحویجہ کی سمت میں سرکاری فوج اور داعش کے جنگجووں کے درمیان لڑائی جاری تھی۔

ادھر عراقی حکومت نے شہر میں پولیس کے گشت میں اضافہ کرتے ہوئے کرکوک شہر میں امن و امان بحال کرنے کی غرض سے کرفیو نافذ کر دیا ہے۔ العربیہ کے نامہ نگار نے اپنے مراسلے میں بتایا ہے کہ کرفیو کا نفاذ پورے الانبار صوبے میں تا حکم ثانی برقرار رہے گا۔ یاد رہے کہ فلوجہ کا علاقہ ابھی تک قانون نافذ کرنے والے عراقی حکام کے کنڑول میں نہیں آیا، اس لئے وہاں کرفیو کا نفاذ عمل میں نہیں آ سکا۔

درایں اثنا بصرہ کی سیاسی کونسل نے اپنے ایک ہنگامی اجلاس میں بصرہ حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ شہر میں امن و امان کی صورتحال پر قابو پانے کے لئے سیکیورٹی کے فوری اقدامات کریں۔

کونسل نے سیاسی قیادت سے اپنے اختلافات بالائے طاق رکھتے ہوئے مطالبہ کیا ہے وہ دہشت گردوں کا مقابلہ کرنے کے لیے باہم شیر و شکر ہو جائیں۔ بصرہ سیاسی کونسل نے مرکزی حکومت پر بھی زور دیا ہے کہ وہ سنجیدگی کے ساتھ امن عامہ کی صورتحال پر توجہ دیں اور شہریوں کو مسلح دہشت گردوں کے چنگل سے باہر نکلنے میں مدد کریں۔