.

غربِ اردن: چاقو کے وار سے اسرائیلی عورت ہلاک

اسرائیلی سکیورٹی گارڈ کی جوابی فائرنگ سے فلسطینی قتل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دریائے اردن کے مغربی کنارے کے علاقے میں ایک یہودی بستی کے نزدیک ایک فلسطینی نے مبینہ طور پر چاقو کے پے درپے وار کرکے ایک یہودی آباد کار عورت کو ہلاک اور دو افراد کو زخمی کردیا ہے۔

العربیہ نیوز چینل کے نمائندے کی اطلاع کے مطابق سوموار کو یہ واقعہ مقبوضہ بیت المقدس کے جنوب مغرب میں واقع یہودی بستی گش عتزیون کے نزدیک پیش آیا ہے۔اسرائیلی پولیس نے یہودی آبادکاروں کو چاقو کے پے درپے وار سے زخمی کرنے والے فلسطینی کو گولی مار کر قتل کردیا ہے۔

اسرائیلی پولیس کی ترجمان لوبا سامری نے کہا ہے کہ حملہ آور یہودی بستی ایلن شووت کے سامنے ایک بس اسٹاپ پر اپنی کار سے اترا تھا اور اس نے آناً فاناً تین افراد پر چاقو کے وار کردیے۔

اس واقعے کے فوری بعد نزدیک کھڑے ایک سکیورٹی گارڈ نے حملہ آورفلسطینی پر فائرنگ کردی جس سے وہ شدید زخمی ہوگیا۔اس کو مقبوضہ بیت المقدس کے ایک اسپتال میں منتقل کیا گیا جہاں وہ اپنے زخموں کی تاب نہ لا کر چل بسا ہے۔

قبل ازیں اسرائیلی دارالحکومت تل ابیب میں بھی ایسا ہی واقعہ پیش آیا تھا جہاں ایک حملہ آور نے ایک اسرائیلی فوجی کو چاقو گھونپ کر شدید زخمی کردیا تھا۔ان دونوں واقعات کے حوالے سے فلسطینیوں کی جانب سے کوئی بیان جاری کیا گیا ہے اور نہ یہ واضح ہوا ہے کہ یہودی آباد کاروں پر چاقو سے حملہ کرنے والے کے مقاصد کیا تھے۔