.

عراق کا آسٹریلیا سے مزید فوجی امداد دینے کا مطالبہ

آسٹریلوی وزیراعظم ٹونی ایبٹ کی بغداد میں ڈاکٹر حیدر العبادی سے بات چیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے وزیراعظم حیدرالعبادی نے اپنے آسٹریلوی ہم منصب ٹونی ایبٹ سے سخت گیر جنگجو گروپ دولت اسلامی (داعش) کے خلاف جنگ میں مزید فوجی امداد مہیا کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

عراقی وزیراعظم کے دفتر کی جانب سے اتوار کو جاری کردہ ایک بیان کے مطابق ''حیدرالعبادی نے آسٹریلیا سے عراقی فورسز کو مسلح کرنے اور ان کی تربیت کا کام تیز کرنے کی ضرورت پر زوردیا ہے تاکہ داعش کے خلاف جنگ کو فیصلہ کن بنایا جاسکے اور اس تنظیم کا خاتمہ کیا جاسکے''۔

انھوں نے یہ بات آسٹریلوی وزیراعظم ٹونی ایبٹ کے ساتھ بغداد میں ملاقات میں کہی ہے۔وہ اتوار کو بغداد کے دورے پر پہنچے ہیں۔ان کے اس دورے کا مقصد سخت گیر جنگجو گروپ داعش کے خلاف جنگ میں دوطرفہ تعاون بڑھانے اور عراقی فورسز کی تربیت سے متعلق امور پر میزبان ملک کی قیادت سے بات چیت کرنا ہے۔

آسٹریلیا عراق میں داعش کے خلاف امریکا کی قیادت میں اتحاد کا حصہ ہے اور اس نے اپنے خصوصی دستے بھی عراقی فوج کی تربیت کے لیے اس ملک میں تعینات کر رکھے ہیں۔وہ ان چند ممالک میں سے ایک ہے جس نے سب سے پہلے داعش مخالف جنگ میں شرکت کی تھی۔

واضح رہے کہ دسیوں آسٹریلوی شہریوں کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ وہ داعش کی صفوں میں شامل ہو کرعراقی اور شامی فوج سمیت اپنے مخالف جنگجو گروپوں کے خلاف لڑ رہے ہیں۔ان کے بارے میں آسٹریلوی حکام اس خدشے کا اظہار کرچکے ہیں کہ وہ وطن واپسی کی صورت میں حملے کرسکتے ہیں۔