.

لیییا پر تنازعہ: قطر نے مصر سے سفیر واپس بلا لیا

قطر کا مصر کے لیبیا پر یک طرفہ فضائی حملوں پر تحفظات کا اظہار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق خلیجی ریاست قطر نے مصر کے ساتھ لیبیا پر فضائی حملوں سے پیدا ہونے والے تنازعے کے بعد قاہرہ میں متعیّن اپنے سفیر کو مشاورت کے لیے واپس بلا لیا ہے۔

قطر کا کہنا ہے کہ اس نے عرب لیگ میں مصری ایلچی کے ریمارکس کے بعد اپنے سفیر کو واپس بلایا ہے۔مصری میڈیا کی رپورٹس کے مطابق عرب لیگ میں مصر کے ایلچی طارق عادل نے قطر کی جانب سے لیبیا پر مصری فضائیہ کے حملوں پر تحفظات کا اظہار کرنے پر تنقید کی ہے اور دوحہ حکومت پر دہشت گردی کی حمایت اور عرب اتفاق رائے سے انحراف کا الزام عاید کیا ہے۔

درایں اثناء قطری وزارت خارجہ کے شعبہ عرب امور کے ڈائریکٹر نے بتایا ہے کہ دوحہ نے عرب لیگ کے قاہرہ میں منعقدہ اجلاس میں مصر کی جانب سے عرب ریاستوں کے ساتھ مشاورت کے بغیر اور یک طرفہ طور پر لیبیا پر فضائی حملوں کے حوالے سے اپنے تحفظات کا اظہار کیا تھا۔

مصر کے لڑاکا طیاروں نے لیبیا کے شہر درنہ میں دولت اسلامی عراق وشام (داعش) کے ٹھکانوں پر گذشتہ سوموار کو بمباری کی تھی۔اس سے ایک روز پہلے داعش نے ایک ویڈیو جاری کی تھی جس میں اس کے نقاب پوش جنگجوؤں کو یرغمال اکیس قبطی عیسائیوں کے گلے کاٹتے ہوئے دکھایا گیا تھا۔اس ویڈیو کے منظرعام پر آنے کے بعد مصر میں شدید غم وغصہ پایا جارہا ہے۔