.

عراقی فورسز کا موصل یونی ورسٹی پر دھاوا.. داعش کا بھاری جانی نقصان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں نینوی صوبے میں آپریشنز کے کمانڈر عبد الامير رشيد يارالله نے جمعے کے روز بتایا ہے کہ داعش تنظیم کے خلاف کئی روز سے جاری شدید لڑائی کے بعد انسداد دہشت گردی فورس نے موصل یونی ورسٹی پر حملہ کر کے کیمپس میں متعدد عمارتوں کا کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔

عبدالامیر کے مطابق عراقی فورسز کی پیش قدمی جاری ہے جب کہ داعش تنظیم موصل کے وسط میں دریائے دجلہ پر باقی ماندہ پُلوں کو دھماکوں سے تباہ کرنے کے درپے ہے۔ انہوں نے بتایا کہ انسداد دہشت گردی فورس نے موصل شہر کے بائیں پرلے دوسرے پُل کا کنٹرول سنبھال کر وہاں عراقی پرچم لہرا دیا جب کہ نینوی صوبے کی عمارت اور دیگر سرکاری عمارتوں پر بھی مذکورہ فورسز کو کنٹرول حاصل ہو گیا ہے۔

"العربیہ" نیوز چینل کے نمائندے کے مطابق عراقی فورسز نے الصدریہ کے علاقے کے علاوہ سرکاری محکموں کے کمپلیکس کو بھی آزاد کرا لیا ہے۔ اس دوران داعش تنظیم کو بھاری جانی نقصان اٹھانا پڑا۔

اس سے قبل انسداد دہشت گردی کے ادارے نے اعلان کیا تھا کہ عراقی فورسز نے موصل شہر کے مشرقی حصے کا 80 سے 85% کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔