.

پوتین شام میں ، روسی فوج کے انخلاء کا حکم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روسی نیوز ایجنسی " ٹاس" کے مطابق روسی صدر ولادیمر پوتین پیر کے روز غیر اعلانیہ دورے پر شام پہنچ گئے۔ وہ لاذقیہ میں حمیمیم کے فوجی اڈے گئے جہاں شامی صدر بشار الاسد سے ملاقات کی۔ مذکورہ اڈّے پر روسی صدر کے استقبال کے لیے شامی صدر بشار کے علاوہ ، روسی وزیر دفاع سرگئی شویگو اور شام میں روسی افواج کے کمانڈر سرگئی سورفکون موجود تھے۔ مذکورہ نیوز ایجنسی نے صدر پوتین کے حوالے سے بتایا کہ روس شام میں حمیمیم کا فضائی اور طرطوس کا بحری اڈہ اپنے پاس برقرار رکھے گا۔

ادھر روسی نیوز ایجنسی "ریا" کے مطابق پوتین نے شام سے روسی فوج کے انخلاء کا حکم دیا ہے۔ ایجنسی نے پوتین کے حوالے سے بتایا ہے کہ روسی اور شامی افواج نے محض دو سال کے اندر دنیا کی ایک طاقت ور ترین دہشت گرد جماعت کو تباہ کر ڈالا۔ پوتین کے مطابق اگر دہشت گردوں نے شام میں سر اٹھایا تو روس کاری ضربوں کے ساتھ ان کا تعاقب کرے گا۔

پوتین کا یہ شام کا پہلا دورہ ہے جو ایسے وقت میں کیا گیا جب کہ بشار کی فوج روسی فضائیہ کی معاونت سے شام کے زیادہ تر حصوں پر دوبارہ کنٹرول حاصل کر چکی ہے۔