.

الغوطہ میں بشار کی جانب سے قتل عام جاری ، مزید 23 شہری جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں انسانی حقوق کے سب سے بڑے نگراں گروپ "المرصد" کے مطابق بدھ کے روز دمشق کے قریب محصور علاقے الغوطہ الشرقیہ میں بشار فوج کی فضائیہ کے حملوں میں 5 بچوں سمیت 23 شہری اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے۔

اس سے قبل منگل کے روز بھی الغوطہ الشرقیہ پر شامی حکومت کی بم باری اور حملوں کے نتیجے میں خواتین اور بچوں سمیت 84 شہری جاں بحق ہو گئے۔

شہری دفاع کی ٹیمیں ابھی تک زخمیوں کی امداد میں مصروف ہیں اور ملبے کے نیچے سے لوگوں کو نکالنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

شامی حکومت کی افواج نے 2013 سے الغوطہ الشرقیہ کا محاصرہ کر رکھا ہے۔ اس کے نتیجے میں علاقے میں غذائی مواد اور ادویات کی شدید قلت ہو گئی ہے۔

اقوام متحدہ کے مطابق مذکوہ علاقے میں آخری امدادی قافلہ نومبر 2017 میں داخل ہوا تھا۔