.

فلسطینی وزیراعظم پرقاتلانہ حملے کے بعد غزہ میں قطری کمپنی بند

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی وزیراعظم رامی الحمد اللہ کے حال ہی میں غزہ کی پٹی کے دورے کے دوران قافلے پر ہونے والے حملے کے بعد تحقیقات میں عدم تعاون پر قطر کی ایک موبائل کمپنی کو بند کردیا گیا ہے۔

فلسطینی تنظیم ’حماس‘ کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم پر قاتلانہ حملے میں تعاون نہ کرنے پر قطری۔ فلسطینی موبائل فون کمپنی کے غزہ میں دفاتر بند کردیے گئے ہیں۔

حماس کےپولیس ترجمان ایمن البطینیحی نے بتایا کہ ’نیشنل موبائل‘ فون کمپنی قطر کی’اوریڈو‘ کمپنی کے تحت کام کرتی ہے۔ اس کمپنی کو وزیراعظم پر حملے میں تعاون نہ کرنے پر بند کیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ گذشتہ ہفتے وزیراعظم رامی الحمد اللہ رام اللہ سے غزہ کی پٹی میں پہنچے تو ان کے قافلے کے قریب ایک زور دار دھماکہ ہوا۔ دھماکے میں ان کے ایک ذاتی محافظ سمیت سات افراد زخمی ہوگئے تھے۔

الحمد اللہ کی حکومت نے اس واقعے کی ذمہ داری حماس پر عاید کی تھی تاہم سنہ2007ء سے غزہ پر کنٹرول کرنےوالی تنظیم حماس نے حکومتی الزام مسترد کردیا تھا۔

پولیس کی طرف سے یہ نہیں بتایا گیا کہ آیا قطری کمپنی کی موبائل سروس بھی بند کردی گئی ہے یا نہیں۔