جوہری معاہدے کو ضرر پہنچایا تو بھیانک نتائج آپ کے منتظر ہیں: روحانی کی ٹرمپ کو دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ایرانی صدر حسن روحانی نے اپنے امریکی ہم منصب ڈونلڈ ٹرمپ کو دھمکی دی ہے کہ وہ جوہری معاہدے میں شامل رہیں ورنہ دوسری صورت میں "انہیں بھیانک نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا"۔

منگل کے روز ایرانی سرکاری ٹی وی پر براہ راست خطاب میں روحانی کا کہنا تھا کہ "میں وہائٹ ہاؤس میں موجود شخصیات سے کہہ رہا ہوں کہ اگر انہوں نے اپنی ذمّے داریوں کو پورا نہ کیا تو ایرانی حکومت پورے عزم کے ساتھ حرکت میں آئے گی"۔

روحانی کا مزید کہنا تھا کہ "اگر کسی شخص نے معاہدے سے رُوگردانی کی تو وہ جان لے کہ اسے بھیانک نتائج بھگتنا ہوں گے"۔

امریکی صدر کے مغربی حلیفوں کی جانب سے ٹرمپ پر دباؤ بڑھایا جا رہا ہے تا کہ وہ 2015ء میں ایران کے ساتھ طے پانے والے جوہری معاہدے کو برقرار رکھیں۔ اس سلسلے میں فرانسیسی صدر امانوئل ماکروں ذاتی طور پر ٹرمپ پر زور دیں گے کہ وہ معاہدے سے دست بردار نہ ہوں۔

ٹرمپ یہ کہہ چکے ہیں کہ اگر ان کے یورپی حلیفوں نے 12 مئی تک اس معاہدے میں "خوفناک خامیوں" کی اصلاح نہ کی تو وہ امریکا کی جانب سے تہران پر عائد کی جانے والی اقتصادی پابندیوں کو دوبارہ لاگو کر دیں گے۔ یہ موقف جوہری معاہدے کی بقاء کے لیے خطرہ بن گیا ہے۔

امانوئل ماکروں پیر کے روز واشنگٹن کے دورے پر پہنچے تھے جہاں انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ اس وقت ایران کے عزائم کو دبانے کے لیے کوئی "متبادل منصوبہ" موجود نہیں ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں