.

تیونس میں النھضہ پرمشتمل مخلوط حکومت کا قیام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عرب ملک تیونس میں نامزد وزیراعظم الیاس الفخفاح مسلسل ایک ماہ تک مختلف سیاسی جماعتوں کے ساتھ مشاورت اور مذاکرات کے بعد حکومت کی تشکیل میں کامیاب ہوگئے ہیں۔ تیونس کی نئی حکومت میں مذہبی سیاسی جماعت 'تحریک النہضہ' کو بھی شامل کیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ تیونس کے صدر نے ایک ماہ قبل الیاس الفخفاح کو کابینہ تشکیل دینے کی دعوت دی تھی جس کے بعد انہوں نے مختلف سیاسی جماعتوں کے ساتھ جوڑ توڑ شروع کردیا تھا۔

الفخفاخ نے کہا کہ نئی حکومت میں مختلف سیاسی جماعتوں، سینیر آزاد رہ نماؤں اور سیاسی شخصیات کے ایک وسیع اتحاد پر مشتمل ہے۔ ان کاکہنا تھا کہ نئی حکومت تمام تیونسی طبقات کی نمائندگی کرے گی۔ ہمارے پیش نظر عوام کی فلاح وبہبود اور تیونسی عوام کے اعتماد کی بحالی کا مشن ہوگا جس کے لیے نئی حکومت مسلسل جدو جہد کرے گی۔

وزیراعظم الفخفاخ کی کابینہ میں مختلف سیاسی جماعتوں کے 29 وزراء کو وزارتوں کے قلم دان سونپے گئے ہیں۔ اسلام پسند مذہبی سیاسی جماعت تحریک النہضہ کو کابینہ میں7 وزارتیں دی گئی ہیں۔ ان میں بعض سابقہ حکومت میں بھی وزارتوں پر فائرز رہے ہیں۔ عبداللطیف الماکی کو صحت ، انور معروف کو ٹرانسپورٹ کی وزارتیں دی گئی ہیں۔ ڈیموکریٹک پارٹی نے 3 وزارتیں حاصل کیں۔ تحیا تیونس اور اور عوامی تحریک کو دو دو وزارتیں دی گئی ہیں۔ حزب البدیل اور نداء تیونس کو ایک ایک وزارت دی گئی۔ دیگر وزاریتں آزاد ارکان کو دی گئی ہیں۔