.

کرونا وائرس کا خطرہ، القطیف گورنری سے باہر آمد ورفت عارضی طورپر بند

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی وزارتِ داخلہ القطیف گورنری میں کرونا وائرس کے نئے کیسز سامنے آنے کےبعد گورنری سے باہر آمد ورفت عارضی طورپر بند کردی ہے۔

سعودی پریس ایجنسی "ایس پی اے" کے مطابق وزارت داخلہ کے ایک ذمہ دار ذریعے نے بتایا ہے کہ حفظان صحت کی خاطر محکمہ صحت کے مجاز کرونا وائرس سے بچائو کے لیےاحتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے القطیف گورنری کو سیل کردیا ہے اور اس سے لوگوں کےباہر جانے یا اندر آنے پرعارضی طورپر پابندی عاید کی گئی ہے۔ یہ اقدام القطیف میں کرونا وائرس کے تازہ 11 کیسز سامنے آنے کے بعد کیا گیا ہے تاکہ گورنری سے باہر کرونا وائرس کے پھیلائو کو روکا جا سکے۔

اس سلسلے میں درج ذیل اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔

القطیف کے جنوب میں سیھات سے شمال میں صفوی تک لوگوں کی باہر آمد ورفت بند کردی گئی ہے۔

باہر سے آنے والے افراد کو ان کے گھروں تک پہنچانے میں مدد کی جائے گی۔

تمام سرکاری اور نجی اداروں میں عارضی طورپر کام بند کردیا گیا ہے۔ سیکیورٹی سروسز، ڈسپنسریوں، پٹرول اسٹیشنوں اور صحت سےمتعلق اداروں کے علاوہ دیگر تمام اداروں کو بند کرنے کے احکامات دیے گئے ہیں۔

کمرشل نوعیت کی آمد ورفت کے دوران کرونا وائرس کی منتقلی روکنے کے لیے فول پروف حفاظتی انتظامات کیےگئے ہیں۔

کاروباری نوعیت کی آمد ورفت کے لیے مجاز حکام کی طرف سے متعلقہ افراد کو الیکٹرانک صحت کارڈ جاری کیا جائے گا اور وزارت صحت کی طرف س اس کی منظوری دی جائے گی۔

حکومت کی طرف سے تمام شہریوں پر زوردیا گیا ہے کہ القطیف میں حفظان صحت اور کرونا سے بچائو کے لیے حکومت کی طرف سے وضع کردہ پیرا میٹرز پرعمل درآمد میں مدد فراہم کریں۔