.

سعودی محکمہ صحت نے’میرین ایمبولینس‘ سروس کا افتتاح کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے علاقے جازان میں محکمہ صحت نے مملکت کے جنوب مغرب میں - فرسان جزائر گورنری میں میرین ایمبولینس سروس کا افتتاح کیا ہے۔ یہ ایمبولینس جدید بین الاقوامی معیارات اور جدید حفاظتی حفاظتی نظام کے مطابق تیار کی گئی ہے جس کی تیاری پر 13،600،000 ریال کی لاگت آئی ہے۔

خطے کے گورنر شہزادہ محمد بن ناصر بن عبدالعزیز کی جانب سے بحری ایمبولینس سروس کے افتتاح کے موقعے پر جازان ہیلتھ کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر آواجی النعمی نے کہا کہ میرین ایمبولینس سروس میں تین بیڈ شامل ہیں جن میں ایک انتہائی نگہداشت کا بیڈ مختص ہے۔ ایمبولینس میں پانچ بستروں تک بڑھانے کی صلاحیت موجود ہے۔ ایک کارڈیو پلمونری ریسیسیٹیشن ڈیوائس ، اور ایک اسٹریچر اس کا حصہ ہے۔ لہروں کے نتیجے میں جھٹکوں سے بچانے اور سمندر کے وسط میں نقل و حرکت کے مطابق اسے تیار کیا گیا ہے۔ ایمبولینس میں سیال سکشن ڈیوائس اور ہنگامی نوعیت کی تمام بنیادی ادویات دستیاب ہوں گی۔

میرین ایمبولینس ایکشن پلان 45 منٹ سے زیادہ کی مدت میں فرسان جزیرے سے ایمرجنسی بیمار کیسوں کو جازان بندرگاہ پر منتقل کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ اس میں ایسے سمارٹ سسٹم دستیاب ہیں جو ایمرجنسی اور ڈیزاسٹر مینجمنٹ اور میڈیکل ٹرانسپورٹ میں میڈیکل ٹرانسپورٹ آپریشن سینٹر کو فعال کرتے ہیں۔ جازان ہیلتھ سمندر میں ایمبولینس کی نقل و حرکت پر نظر رکھے گی اور ایمبولینس کا بندرگاہ پر پہنچنے تک مقامات کا پتہ لگائے گی۔

سعودی پریس ایجنسی "ایس پی اے" کے مطابق جازان ریجن کے گورنر نے اس سروس کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ میرین ایمبولینس سروس وزارت صحت کی طرف سے تمام مقامی خاندانوں اور رہائشیوں کو صحت کی سہولیات کی فراہمی کا حصہ ہے۔