حساس وقت میں ایرانی قدس فورس کے کمانڈر کا دورہ عراق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق میں نئی حکومت کی تشکیل کے لیے خفیہ ملاقاتوں کا سلسلہ جاری ہے۔ ان ملاقاتوں کے جلو میں العربیہ/الحدث کے نامہ نگار نے اتوار کے روز بتایا کہ قدس فورس کے کمانڈر اسماعیل قآنی بغداد پہنچے ہیں۔ ایرانی پاسداران انقلاب کی سمندر پار کارروائیوں کی ذمہ دار تنظیم قدس فورس کے کمانڈر اسماعیل قاانی بغداد جانے کے بعد پہلی بار غیر اعلانیہ دورے پر نجف گئے ہیں۔

یہ دورہ ایک حساس وقت پر ہوا ہے جب دوسری طرف آنے والے چند گھنٹوں کے دوران سابق وزیر اعظم ہادی العامری کے گھر پر ان کی جماعت اور الصدر گروپ کے رہ نماؤں کی ایک ملاقات متوقع ہے جس میں نئی حکومت کی تشکیل اور طریقہ کار پر بات چیت کی جائے گی۔

العربیہ/الحدث کے ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ حکومت کی تشکیل کے معاملے پر بات چیت کے لیے ہفتے کی رات ایک میٹنگ ہوئی جس میں مقتدیٰ الصدر اور ہادی العامری نے شرکت کی تھی۔

معلومات میں پتا چلا ہے کہ الصدر نے کسی دوسرے امکان پر غور کیے بغیر "قومی اکثریتی" حکومت بنانے پر اصرار کیا۔ انہوں نے کہا کہ متفقہ حکومت کی تشکیل کی کوئی بھی بات خودکشی کے مترادف ہے۔

کشیدگی

گذشتہ دنوں الصدر اور ایران کی وفادار اور کوآرڈینیشن فریم ورک سے وابستہ کچھ جماعتوں کے درمیان تناؤ میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔ خاص طور پر شیعہ رہ نما کی جانب سے محمد الحلبوسی کو پارلیمنٹ کا دوسری بار اسپیکر منتخب کرنے پر بھی تناؤ دیکھا گیا۔

تاہم اس تناؤ کی بنیادی وجہ حکومت سازی کا مسئلہ بنی ہے جس پر الصدر کا اصرار ہے کہ گذشتہ10 اکتوبر کو ہونے والے پارلیمانی انتخابات میں جیتنے والوں کی نمائندگی ہونی چاہیے۔ انتخابات میں ایران نواز الفتح کی نشستوں میں نمایاں کمی دیکھی گئی۔ ایران کے قریب الفتح اور المالکی نے 30 سے زائد نشستیں حاصل کیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں