"وادی نمار"سعودی عرب کا قدرتی نخلستان جورمضان بھرافطار کے وقت آباد رہتا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کےدارالحکومت الریاض سے تھوڑے فاصلے پر واقعے ’"وادی نمار" ان جگہوں میں سے ایک ہے جورمضان المبارک کے بابرکت ایام میں روزہ افطار کرنے والوں کی وجہ سے آباد رہتا ہے۔

وادی نمار ایک کھلی پارک نما جگہ ہے جو دارالحکومت کے اہم سیاحتی مقامات میں سے ایک ہے۔ یہ وادی سیاحوں کے لیے سب سے زیادہ مشہور اور پرکشش ہے۔ اختتام ہفتہ کے دوران سیاح اس کی مصنوعی جھیل کے گرد بیٹھ کر لطف اندوز ہونے کے لیے یہاں آتے ہیں۔ رمضان کے مقدس مہینے میں جھیل خاندانوں اور دوستوں کی شکل میں آنے والے سیاحوں اور روزہ داروں سے بھر جاتی ہے۔

وادی جھیل کو ریاض کے علاقے میں سب سے خوبصورت قدرتی علاقہ قرار دیا گیا ہے جہاں آبشاروں کے بہتے پانی جھیل کو بھر دیتے ہیں۔ یہ وادی وسیع رقبے پر پھیلی ہوئی ہے۔

جھیل دو کلومیٹر کے کارنیش کی شکل میں فٹ پاتھوں سے گھری ہوئی ہے، جہاں کھجور کے درخت آرام گاہوں کے علاوہ چھوٹی دکانیں موجود ہیں۔ اس کے علاوہ جھیل کو دیکھنے کے لیے بیٹھنے کی جگہیں اور جھیل کے مضافات اور کارنیش کے درمیان پیدل سفر کرنے والوں کی آمدورفت کے لیے داخلی راستے ہیں۔

یہ پارک892 میٹر لمبا ہے اور سائٹ پر پیدل چلنے والوں کے لیے کچے راستے ہیں، جو چٹانوں کی شکلوں، جنگلاتی علاقوں اور پیدل چلنے کی مشق کے لیے پانی کے نالے کے قریب سے گذرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں