اسرائیلی حکومت کا مقبوضہ غربِ اردن میں ہزاروں مکانات کے اجازت نامے دینے پرغور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیل کی قوم پرست مذہبی حکومت نے اتوار کے روز مقبوضہ مغربی کنارے میں ہزاروں مکانات کی تعمیرکے اجازت نامے منظور کرنے کا منصوبہ پیش کیا ہے جبکہ امریکا صہیونی حکومت پر زوردے رہا ہے کہ غربِ اردن میں ان بستیوں کی توسیع کو روکا جائے۔ وہ اسے فلسطینیوں کے ساتھ امن کی راہ میں رکاوٹ سمجھتا ہے۔

مغربی کنارے کے مختلف علاقوں میں 4,560 مکانوں کی منظوری کے منصوبوں کو اسرائیل کی سپریم پلاننگ کونسل کے ایجنڈے میں شامل کیا گیا تھا حالانکہ صرف 1،332 حتمی منظوری کے لیے تیار ہیں، باقی ابھی ابتدائی کلیئرنس کے عمل سے گزر رہے ہیں۔

مغربی کنارے کی انتظامیہ میں قائدانہ کردار ادا کرنے والے وزیر خزانہ بیزایل سموٹریچ نے کہا ہے:’’ہم علاقے پر اسرائیل کی گرفت کو مستحکم کرنے اور آباد کاری کو فروغ دینے کا سلسلہ جاری رکھیں گے‘‘۔

واضح رہے کہ دنیا کے بیشتر ممالک 1967ء کی مشرقِ اوسط کی جنگ میں اسرائیل کے زیر قبضہ فلسطینی علاقوں پر تعمیر کی گئی ان بستیوں کو غیر قانونی قرار دیتے ہیں۔ان کی موجودگی اسرائیل فلسطین تنازع میں بنیادی مسائل میں سے ایک ہے۔

فلسطینی مغربی کنارے اور غزہ کی پٹی میں ایک آزاد ریاست قائم کرنا چاہتے ہیں جس کا دارالحکومت مشرقی بیت المقدس (یروشلم) ہو لیکن امریکا کی ثالثی میں دونوں کے درمیان امن مذاکرات 2014 سے منجمد ہیں۔

جنوری میں اقتدار سنبھالنے کے بعد سے وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو کی اتحادی حکومت نے 7,000 سے زیادہ نئے مکانوں کی تعمیر کی منظوری دی ہے، جن میں سے زیادہ تر مغربی کنارے میں ہیں۔

اس نے ایک قانون میں بھی ترمیم کی تاکہ ہے آباد کاروں کے لیے چار بستیوں میں واپس جانے کا راستہ ہموار کیا جاسکے جو پہلے خالی کردی گئی تھیں۔اتوار کے اسرائیلی فیصلے کے جواب میں فلسطینی اتھارٹی نے کہا ہے کہ وہ پیر کو اسرائیل کے ساتھ ہونے والے مشترکہ اقتصادی کمیٹی کے اجلاس کا بائیکاٹ کرے گی۔

فلسطینی جماعت حماس نے اس اقدام کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس سے اسرائیل کو ہماری زمین پر قانونی حیثیت نہیں ملے گی۔ ہمارے لوگ ہر طرح سے اس کی مزاحمت کریں گے جبکہ یہودی آباد کار گروہوں نے اس اعلان کا خیر مقدم کیا ہے۔

گوش ایتزیون ریجنل کونسل کے میئر اور یشا کونسل کے چیئرمین شلومو نیمان نے مغربی کنارے کے لیے اسرائیل کے بائبل کے ناموں کا استعمال کرتے ہوئے کہا، "لوگوں نے یہودیہ، سامریہ اور وادیِ اردن میں تعمیر جاری رکھنے کا انتخاب کیا ہے، اور ایسا ہی ہونا چاہیے‘‘۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں