دوبارہ قرآن پاک کی بے حرمتی کی گئی تو سویڈن سے تعلقات ختم کردیں گے:عراق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق نے خبردار کیا ہے کہ اگرسویڈن میں قرآن پاک کو نذرآتش کرنے کا گستا خانہ واقعہ دوبارہ ہوا تو سویڈن کے ساتھ تعلقات ختم کردیےجائیں گے۔

عراق کی طرف سے یہ موقف ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب دوسری طرف سویڈن میں قرآن پاک کی بے حرمتی کے مکروہ حربے کے بعد بغداد میں مشتعل مظاہرین نے سویڈش سفارت خانے کو نذرآتش کردیا گیا ہے۔

وزیراعظم محمد شیاع السودانی کے دفتر کی طرف سے جاری ایک بیان میں ملک میں سکیورٹی کی صورت حال پر بات کی۔ اس سے قبل انہوں نے سکیورٹی حکام کے ساتھ ایک میٹنگ بھی کی تھی۔

عراقی حکومت نے گذشتہ روز سویڈن کی حکومت کو سفارتی ذرائع کے ذریعے مطلع کیا کہ وہ سفارتی تعلقات منقطع کر دےگا۔ بغداد کا کہنا ہے کہ سویڈن میں قرآن پاک کو نذرآتش کرنے کا واقعہ دوبارہ ہوا تو عراق سویڈن کے ساتھ سفارتی تعلقات ختم کردے گا۔

بیان میں کہا گیا کہ اجلاس میں سویڈش سفارت خانے کو جلانے کے واقعے کی مذمت کی اور اسے "سکیورٹی کی خلاف ورزی قرار دیا۔ حکومت نے سویڈش سفارٹ خانے کو آگ لگانے کے واقعے میں ملوث افراد اور کوتاہی برتنے والوں کے خلاف سختی سے نمٹے گی۔

یہ بات بغداد میں سویڈن کے سفارت خانے کو آج فجر کے وقت نذرآتش کرنے کے بعد سامنے آئی ہے جب صدری تحریک کے رہ نما مقتدیٰ الصدر کے حامیوں کی جانب سے اسٹاک ہوم میں عراقی سفارت خانے کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا تھا۔

’اے ایف پی‘ کے مطابق مظاہرے کے آغاز کے چند گھنٹے بعد سکیورٹی فورسز نے مظاہرین کو منتشر کیا۔

ایک عراقی سکیورٹی ذرائع نے اے ایف پی کو بتایا کہ سویڈن کے سفارت خانے کو نذر آتش کرنے کے بعد بغداد میں تقریباً 20 مظاہرین کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں