میرے بیٹے نے ہمارا امارات کا سر بلند کیا:والدہ سلطان النیادی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

متحدہ عرب امارات کے خلاباز سلطان النیادی نے اتوار کو بین الاقوامی خلائی اسٹیشن کو الوداع کہا جس کے بعد النیادی اور ان کے ہمراہ چھ رکنی عملہ زمین پر واپسی کے لیے روانہ ہوگیا ہے۔

"ایکس" پلیٹ فارم (سابقہ ٹویٹر) پر اپنے آفیشل اکاؤنٹ پر ایک ٹویٹ میں النیادی نے کہا کہ "خلا میں میں الوداع نہیں کہوں گا بلکہ آپ سے ملوں گا۔"

انہوں نے مزید کہا: "آپ کو بین الاقوامی خلائی اسٹیشن پر یا زیادہ دور کی منزل پر ایک نئے مشن کے ساتھ ملیں گے۔"

النیادی نے کہا کہ واپس آنے سے پہلے میں امارات کی نعمت کے لیے خدا کا شکر ادا کرتا ہوں، جس نے ہمارے خوابوں کو کامیابیوں میں بدل دیا۔ میں آپ کے اعتماد اور محبت کا شکریہ ادا کرتا ہوں، ہمارے محفوظ رہنے کے لیے آپ کی دعائیں۔ مجھے امید ہے کہ آپ خیریت سے دیکھیں گے۔"

امریکی خلائی ایجنسی "ناسا" اور "اسپیس ایکس" کی جانب سے تصدیق کی گئی ہے کہ "ڈریگن" گاڑی کے اسٹیشن سے الگ ہونے کی ممکنہ تاریخ 3 ستمبر کو متحدہ عرب امارات کے وقت کے مطابق دوپہر 03:05 بجے سے پہلے نہیں ہوگی جب کہ زمین پر لینڈنگ 4 ستمبر کو رات 08 بجے ہوگی تاہم موسمی حالات کی وجہ سے میں تاخیر ہوسکتی ہے۔

محمد بن راشد خلائی مرکز کے مطابق النیادی اور ان کے ساتھیوں کو زمین پر لے جانے والے "ڈریگن" خلائی جہاز کی واپسی کے 7 مراحل شامل ہیں:

پہلا: پروپلشن انجنوں کی اگنیشن بین الاقوامی اسٹیشن کو چھوڑنے کا مرحلہ ہوگا۔
دوسرا مدار کو کم کرنے کے لیے پروپلشن انجنوں کے اگنیشن کا مرحلہ ہوگا۔
تیسرا اس میں گاڑی کی بنیاد کو الگ کرنا شامل ہے۔
چوتھے میں اسٹیشن کے مدار سے باہر نکلنے کے لیے پروپلشن انجنوں کا اگنیشن ،
پانچواں زمین کے ماحول میں داخل ہونا، چھٹا گاڑی کے پیراشوٹ کھولنا اور
ساتواں ڈریگن کا پانی میں اترنا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں