دبئی: اسرائیلی قونصل خانے کی حماس میزائل حملے کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

دبئی میں اسرائیلی قونصلیٹ جنرل نے اسرائیل پر حماس کے میزائل فائر کرنے کی مذمت کرتے ہوئے انتباہ کیا ہے کہ حماس کو اس کا خمیازہ بھگتنا پڑے گا۔

اسرئیلی قونصلیٹ کے ترجمان نے اپنے ایک بیان میں حماس کی طرف سے ہفتے کے روز اسرائیل پر فائر کیے گئے میزائلوں کو دہشت گردانہ حملہ قرار دیا ۔ واضح رہے حماس کی طرف سے یہ میزائل حملہ یہودیوں کی چھٹی کے روز کیا گیا ہے ۔
ہفتے کی صبح غزہ کی پٹی سے حماس نے کثیر تعداد میں میزائلوں سے اسرائیل پر حملہ کیا۔ جبکہ قونصلیٹ آف اسرائیل کے مطابق حماس کے دہشت گرد اسرائیل کے اندر تک مختلف علاقوں میں گھس آئے۔ اسرئیلی قونصل خانے کے ترجمان نے اپنے بیان میں مزید کہا ، جب لاکھوں اسرائیلی اپنے اہل خانہ سمیت اپنا مذہبی تہوار سمچات تورات منانے کے لئے رواں دواں تھے تو حماس نے میزائل حملے شروع کر دیے ۔حملوں سے سولین آبادی متاثر ہوئی۔

بتایا گیا ہے کہ حماس اسرائیل کے اندر شمال اور جنوب میں واقع بستیوں ، قصبوں کے علاوہ یروشلم کو بھی نشانہ بنارہی ہے۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ دہشت گرد اسرائیل کے اندر تک گھس گئے تاکہ زیادہ تر عام لوگوں کو بھی نقصان پہنچا سکیں۔

ترجمان قونصل خانہ کے مطابق اسرائیلی فورسز ان تھک انداز میں اسرائیلی شہریوں کی حفاظت کے لئے تمام محاذوں پر مصروف ہیں۔ ترجمان نے مزید کہا حماس نے اسرائیلیوں شہریوں پر ایک بڑے دہشت گردآنوں حملوں کا آغاز کیا ہے۔ ان حملوں میں میزائل فائرنگ کے علاوہ اندھا دھند گن فائر بھی کئے۔
قونصل خانے کے ترجمان کا کہنا ہے کہ اسرائیل غزہ کی پٹی پر امن قائم کرنے کے لئے کوشاں ہے اس لئے یہ حملہ ایک طویل عرصے کے بعد کیا گیا ہے۔ حماس کا یہ حملہ ظاہر کرتا ہے کہ حماس کو شہریوں اور بہتری میں کوئی دلچسپی نہیں ہے۔ بلکہ اسرائیلیوں کو نقصان پہنچانے کی کوشش میں ہے۔

ترجمان نے کہا غزہ کی پٹی کے لوگ اسرائیل کے دشمن نہیں ہیں مگر یہ دہشت گرد تنظیمیں ہیں جو اسرائیل کی دشمن ہیں۔تاہم اسرائیل اپنے شہریوں کی ہر طرح سے حفاظت کرنے کے لئے کمٹڈ ہے۔

خیال رہے یورپی یونین ، برطانیہ ، اٹلی، جرمنی اور مصر سمیت کئی ممالک نے اس میزائل حملے کی مذمت کی ہے۔ ان ملکوں نے کشیدگی کو نہ بڑھانے کی بھی اپیل کی ہے.

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں