فلسطین اسرائیل تنازع

’تم کذاب اور بے کار لیڈر ہو‘ نیتن یاھو کو اپنے سپاہی نے کھری کھری سنا دیں

فوجی اہلکار کی طرف سے لعن طعن کے بعد نیتن یاھو کو فوجی اڈے سے طے شدہ خطاب کے بغیر واپس لوٹنا پڑا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سات اکتوبر کو غزہ کی پٹی میں حماس اور دوسرے فلسطینی عسکری گروپوں کی طرف سے اسرائیلی بستیوں اور فوجی ٹھکانوں پر ڈرامائی حملے کے بعد اسرائیلی عوام کی طرف سے اس حملے کو روکنے میں ناکامی پر حکومت اور سکیورٹی اداروں پر سخت برہمی کا اظہار کیا جا رہا ہے۔

حکومت کے خلاف ناراضی نہ صرف عوامی حلقوں میں پائی جا رہی ہے بلکہ فوج میں بھی ان کی مبینہ غفلت پرانہیں لعن طعن کا سامنا ہے۔

اسرائیلی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق حال ہی میں اسرائیلی وزیراعظم ایک فوجی اڈے پر سپاہیوں کا مورال بلند کرنے گئے تو انہیں ایک فوجی افسر کی طرف سے کھری کھری سننا پڑیں جس پر وہ اپنا طے شدہ خطاب کیے بغیر ہی واپس آگئے۔

اسرائیلی براڈکاسٹنگ کارپوریشن نے اسرائیلی وزیر اعظم کے خلاف دباؤ اور ناراضگی ظاہر کرنے والے ایک اس واقعے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے بتایا کہ بنجمن نیتن یاہو کو گذشتہ جمعرات کو ایک فوجی اڈے کے دورے کے دوران ایک ریزرو افسر کی جانب سے توہین آمیز الفاظ کا نشانہ بنایا گیا۔ جس کی وجہ سے انہیں اپنا شیڈول کے مطابق وہاں پر خطاب ترک کرنا پڑا۔

براڈ کاسٹنگ اتھارٹی نےمزید کہا کہ ایک افسر نے نیتن یاہو کے سامنے بلند آواز میں چیخا اور انہیں "جھوٹا" اور "بے کار" لیڈر قرار دیا۔

عرب ورلڈ نیوز نے اس واقعے کے بارےمیں بتایا کہ اس واقعے کے بعد وزیر اعظم نے تقریر نہ کرنے کا فیصلہ کیا۔فوجیوں سے انفرادی ملاقات کی اور وہاں سے واپس لوٹ آئے۔

اسرائیلی میڈیا کے مطابق نیتن یاہو کا مقصد غزہ کی پٹی میں حماس کے ساتھ بڑھتے ہوئے تنازع کی روشنی میں سلامتی کی صورتحال پر فوجیوں سے بات کرنا تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں