فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیل کے سابق سفیر نے فلسطینیوں کو 'خوفناک، غیر انسانی جانور' قرار دیا

اسرائیل کی جانب سے غزہ کی پٹی میں شہری آبادی کو اجتماعی سزا دینے کے بارے میں سوال کے جواب میں ڈین گیلرمین نے یہ تبصرہ کیا۔

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اقوامِ متحدہ میں اسرائیل کے سابق سفیر ڈین گیلرمین نے بدھ کے روز سکائی نیوز کو ایک ٹیلی ویژن انٹرویو میں فلسطینی عوام کو "خوفناک اور غیر انسانی جانور" قرار دے دیا۔

اسرائیل کی جانب سے غزہ کی پٹی میں شہری آبادی کو اجتماعی سزا اور بجلی اور ایندھن جیسی ضروری اشیاء کی بندش کے بارے میں سوال کے جواب میں گیلرمین نے یہ بات کہی۔

انہوں نے کہا: "میں اس مسلسل تشویش سے بہت پریشان اور متذبذب ہوں جو دنیا فلسطینی عوام کے لیے اور درحقیقت ان خوفناک غیر انسانی جانوروں کے لیے ظاہر کر رہی ہے جنہوں نے اس صدی کے بدترین مظالم کیے ہیں۔"

اقوامِ متحدہ میں اسرائیل کے سابق سفیر نے 7 اکتوبر کو اسرائیل پر حماس کے مہلک حملے کا 9/11 سے موازنہ یہ کہہ کر کیا کہ انہیں نہیں یاد کہ طالبان اور القاعدہ کے لیے لوگوں نے آنسو بہائے ہوں۔ وہ غزہ میں پھیلنے والے انسانی بحران پر عالمی سطح پر اٹھنے والی آواز کا حوالہ دے رہے تھے۔

گیلرمین نے کہا، "جب اسرائیل کی بات آتی ہے تو ہر کوئی اچانک ایک عظیم انسان دوست بن جاتا ہے، یہ بات باکل بھول کر کہ دو ہفتے پہلے کیا ہوا۔ یہ ناقابلِ فراموش اور ناقابلِ معافی ہے۔"

اسرائیل کا غزہ کا مکمل محاصرہ

7 اکتوبر کو حماس کے مہلک حملے میں 1,400 اسرائیلی ہلاک ہوئے اور 220 کے قریب یرغمال بنا لیے گئے جس کے بعد اسرائیل نے غزہ پر مکمل محاصرے کا اعلان کر دیا۔

اس کے بعد سے اسرائیل نے گنجان آباد غزہ کی پٹی پر مسلسل فضائی حملے شروع کر رکھے ہیں اور خوراک اور پانی جیسی اہم رسد پر ناکہ بندی مسلط کر رکھی ہے۔

اسرائیل نے کہا ہے کہ وہ حماس کے "دہشت گردوں" کو نشانہ بنا رہا ہے اور اس نے عسکریت پسند گروپ پر فلسطینی شہریوں کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرنے کا الزام لگایا ہے۔

فلسطینیوں کے مطابق اسرائیلی فضائی گولہ باری نے اس پٹی پر اندھا دھند حملہ کیا ہے جس سے پورے پورے خاندان صفحۂ ہستی سے مٹ گئے، رہائشی محلے مسمار ہو گئے اور ہسپتالوں، گرجا گھروں، مساجد اور صحافیوں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

حماس کے اسرائیل پر حملے کے بعد سے اب تک اسرائیلی بمباری میں 2360 بچوں سمیت 5,791 سے زائد فلسطینی ہلاک ہو چکے ہیں۔

جبکہ محصور غزہ کی پٹی میں امداد کی اجازت دے دی گئی ہے تو انسانی ہمدردی کی تنظیمیں جیسا کہ اقوامِ متحدہ امدادی ایجنسی برائے فلسطینی پناہ گزین (یو این آر ڈبلیو اے) نے انتباہ دیا ہے کہ زمین پر اہم انسانی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے کافی نہیں ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں