لبنان سے اسرائیل پر راکٹ حملے میں متعدد اسرائیلی فوجی زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے پیر کے روز اعلان کیا ہے کہ اس نے لبنان کے اندر دو مارٹر گولے فائر کیے جانے کا پتہ لگانے کے بعد لبنان کے اندر اہداف پر توپ خانے سے شیلنگ کی ہے۔

یہ بات اسرائیلی براڈکاسٹنگ کارپوریشن کی جانب سے پیر کے روز سامنے آئی ہے کہ دو گولے شمالی اسرائیل کے الجلیل کے علاقے میں گرے، جس میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

حزب اللہ نے بعد میں ایک بیان جاری کیا جس میں کہا گیا کہ اس نے الضہیرہ کے مقام پر ایک پیادہ فورس کو راکٹوں سے براہ راست نشانہ بنایا۔

اسرائیلی میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ لبنانی سرزمین سے داغے گئے ٹینک شکن میزائل فائر سے دو اسرائیلی زخمی ہو گئے۔

العربیہ اور الحدث چینلوں کے ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ لبنان سے فائر کیے گئے ٹینک شکن گولے سے 5 اسرائیلی فوجی زخمی ہوئے، جن میں سے ایک کی حالت نازک ہے۔

درایں اثناء لبنان کی قومی خبر رساں ایجنسی نے آج سوموار کو کہا کہ طیر حرفا، شیحین اور ام التوت قصبوں کے مضافات جو اسرائیلی توپ خانے سے نشانہ بنایا گیا۔

بعد ازاں لبنانی خبر رساں ایجنسی نے تصدیق کی کہ اسرائیلی بمباری نے جنوبی لبنان کے مغربی سیکٹر میں لبونہ کے علاقے کو نشانہ بنایا۔

اسرائیل لبنانی حزب اللہ پر جنوبی لبنان سے حملے کرنے اور شمالی اسرائیل کو نشانہ بنانے کا الزام لگاتا ہے۔

حزب اللہ 7 اکتوبر سے اسرائیل پر نسبتاً محدود حملے کر رہی ہے لیکن اسرائیلی حملوں میں حزب اللہ کے کم از کم 70 ارکان کے ساتھ ساتھ متعدد لبنانی شہریوں کی ہلاکت کے واقعات رونما ہوچکے ہیں۔ اب حزب اللہ کے جنگی طریقوں میں وسعت آ گئی ہے جس میں 300 سے 500 کلوگرام وزنی وار ہیڈز لے جانے والے میزائلوں اور خودکش ڈرونز کا استعمال شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں