فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیل کے ساتھ تعلقات تمام رکاوٹوں کے باوجود برقرار رہیں گے: یو اے ای کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ میں اسرائیلی جنگ کے تین ماہ مکمل ہونے پر متحدہ عرب امارات نے اعلان کیا ہے کہ اسرائیل کے ساتھ تعلقات کا فیصلہ سٹریٹیجک نوعیت کے فیصلے کی بنیاد پر قائم کیے تھے۔ اس لیے انہیں غزہ میں جاری جنگ کے باوجود اور ہر صورت برقرار رکھا جائے گا۔

یہ اعلان صدر امارات کے سفارتی امور کے لیے مشیر انور قرقاش نے دبئی میں ایک کانفرنس کے دوران کہی ہے۔

انور قرقاش نے کہا ' اسرائیل کے ساتھ تعلقات کا فیصلہ سٹریٹجک بنیادوں پر لیا گیا تھا اور سٹریٹجک نوعیت کے فیصلے جلدی تبدیل نہیں کیے جاتے بلکہ یہ طویل مدتی فیصلے ہوتے ہیں۔اس لیے فلسطینی عسکریت پسند گروپ حماس کے ساتھ اسرائیلی جنگ کا ان تعلقات پر کوئی اثر نہیں ہو سکتا۔

مشیر برائے سفارتی امور کا مزید کہنا تھا ' اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ سٹریٹجک بنیادوں پر کیے گئے اس فیصلے کی راہ میں کئی رکاوٹیں آئیں گی، جیسا کہ ہم اس وقت بھی ایک بڑی رکاوٹ کا سامنا کر رہے ہیں تاہم اس رکاوٹ کے ساتھ ہمیں نمٹنا ہو گا۔'

واضح رہے بعض عرب ملکوں نے اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم کر رکھے ہیں۔ یہ تعلقات غزہ میں جنگ کے باوجود جاری رہے ہیں۔ ان ملکوں میں سے امارات اور بحرین نے ابراہم معاہدے کے تحت اسرائیل کے ساتھ 2020 میں تعلقات قائم کیے تھے۔

اسرائیل نے غزہ میں 22000 سے زائد فلسطینیوں کو ہلاک کیا ہے۔ جبکہ 20 لاکھ سے زیادہ فلسطینی اسرائیل کی بمباری کی وجہ سے بے گھر ہو چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں