سعودی عرب میں گوشت کی جنوبی افریقہ سے درآمد شروع ، جنوبی افریقہ پر عاید پابندی ختم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب نے فیصلہ کیا ہے کہ جنوبی افریقہ سے گوشت کی درآمد پر عاید پابندیوں کو ختم کر کے آنے والے دنوں میں گوشت کو درآمد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس فیصلے کا مقصد خطے کے ملکوں میں سعودی سرمایہ کاری بڑھانا ہے ، تاکہ ترقی پذیر ملکوں کی معیشت میں بہتری و استحکام ہو سکے۔

جنوبی افریقہ پر یہ پابندی بیس سال کے لیے لگائی گئی تھی۔ یہ پابندی سعودی عرب کے خوارک اور منشیات سے متعلق انتظامی امور کے شعبے کی طرف سے عاید کی گئی ان پابندیوں کے خاتمے کے لیے سمری کی حتمی منطوری ماہ اگست میں کی گئی ، جس کے نتیجے میں آنے والی شپمنٹس کا آغاز ہو جائے گا۔

جنوبی افریقہ میں کرن بیف نامی بڑی کمپنی کے مالک میتیھو کرن ک مطابق یہ پابندی پچھلے سال ماہ اگست میں ختم ہو گئی تھی اب اس سلسلے میں عملی پیش رفت کا وقت ہے۔ میتھیو کرن نے صحافیوں کے ساتھ بات چیت کے دوران کہا اب آنے والے چند ہفتوں میں برآمدات شروع ہو جائیں گی۔

واضح رہے سعودی عرب دو ارب ڈالر سالانہ کی گوشت کی مارکیٹ ہے۔ لیکن جانوروں کی منہ اور پیروں کی بیماری پھیلنے کے باعث سعودی عرب کی طرف سے پابندی لگا دی گئی تھی۔

سعودی عرب ان ممالک میں شامل ہے جنہیں برکس میں شامل چین، روس، بھارت، برازیل اور جنوبی افریق نے جوائن کرنے کی دعوت دی ہے۔ سعودی وزیر برائے اقتصادیات و منصوبہ بندی فیصل الابراہیم نے کہا ' تیل کی دولت سے مالا مال ملک اب بھی برکس کی دعوت کا جائزہ لیا جا رہا ہے۔جنوبی افریقہ اور سعودی عرب کے درمیان دواسازی اور ٹیکنالوجی ممکنہ تعاون کے شعبے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں