سعودی عرب میں حج ویزا پرآنے والوں کے لیے ڈیجیٹل شناخت کا آغاز

حجاج کو "ابشر - توکلنا" پلیٹ فارم کے ذریعے الیکٹرانک طور پر اپنی شناخت ثابت کرنے کے قابل بنایا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں وزارت داخلہ نے سال 1445 ہجری میں حج ویزا لے کر سعودی عرب آنے والوں کے لیے ڈیجیٹل شناختی سروس کا آغاز کردیا۔ یہ سروس خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان کی حکومت کی جانب سے ’’ ویژن 2030 ‘‘ کے تحت خدمات اور سہولیات کو ڈیجیٹلائز کرنے کی کوششوں کا ایک حصہ ہے۔

سعودی وزارت داخلہ نے وضاحت کی کہ حجاج کے لیے ڈیجیٹل شناخت وزارت خارجہ، وزارت حج و عمرہ اور سعودی ڈیٹا اینڈ آرٹیفیشل انٹیلی جنس اتھارٹی (SDAIA) کے تعاون سے تیار کی گئی ہے۔ یہ سروس عازمین کو اس قابل بناتی ہے کہ وہ ایپ ’’ابشر۔ توکلنا‘‘ کے ذریعے اپنی شناخت الیکٹرانک طور پر ثابت کر سکیں۔ ڈیجیٹل شناخت کی اس نئی سروس سے عازمین حج کو فراہم کی جانے والی سروسز کا معیار بہتر ہو گا۔

سعودی سرکاری ادارے عازمین حج کی حفاظت اور حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے ہر ممکن کوششیں کر رہے ہیں۔ دوسری طرف سعودی وزارت داخلہ نے بغیر اجازت حج کرنے اور حج کے ضوابط کی خلاف ورزی پر جرمانے پر عمل درآمد شروع کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ وزارت داخلہ نے اپنے اعلان میں کہا ہے کہ اجازت کے بغیر حج کی کوشش کرنے والا کوئی سعودی شہری ہو یا رہائشی اسے 10000 ریال جرمانہ ادا کرنا ہوگا۔

جیسے ہی حج کا سیزن قریب آتا ہے تمام سیکورٹی ایجنسیاں ان جعلی حج اشتہارات کی نگرانی کو تیز کر دیتی ہیں جو حج کے خواہاں افراد کو گمراہ کرتے اور دھوکہ دہی کا نشانہ بناتے ہیں۔ اس حوالے سے بھی سعودی وزارت داخلہ نے خبردار کیا ہے کہ حج کے حوالے سے گمراہ کن اشتہارات چلانے والوں کے خلاف گھیرا تنگ کیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں