.

سعودی عرب کی جانب سے کوئٹہ چرچ حملے کی مذمت

کوئٹہ چرچ حملے پر دہشت گرد حملہ، 9 افراد لقمہ اجل بن گئے، دسیوں زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے پاکستان کے جنوب مغربی شہر کوئٹہ کے ایک گرجا گھر میں خود کش حملے کی مذمت کی ہے۔

سعودی دفتر خارجہ کے ایک عہدیدار نے اس حوالے سے اعلامیہ جاری کرکے واضح کیا کہ سعودی عرب کوئٹہ کے گرجا گھر میں خود کش حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتا ہے اور جاں بحق ہونے والوں کے لواحقین، پاکستانی حکومت اور عوام سے تعزیت وہمدردی کا اظہار ضروری سمجھتا ہے۔

دفتر خارجہ کے عہدیدار نے خود کش حملے میں زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لئے دعا کرتے ہوئے واضح کیا کہ سعودی عرب، دہشت گردی اور انتہا پسندی کے خلا ف برادر اور دوست ممالک کے ساتھ کھڑا ہوا ہے۔

یاد رہے کہ پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں دہشت گردوں نے گذشتہ روز ایک بار پھر وار کیا۔ اس بار دہشت گردوں نے زرغون روڈ پر واقع ایک چرچ کو بم حملے میں نشانہ بنایا گیا اور اس کے بیرونی دروازے پر بم دھماکے میں نو افراد لقمہ اجل بنے جبکہ تیس زخمی ہو گئے ہیں۔

ریسکیو ذرائع کا کہنا تھا کہ خودکش بم دھماکا بیتھل میموریل میتھڈوسٹ چرچ کے باہر ہوا۔ اس وقت چرچ کے اندر دعائیہ تقریب جاری تھی اور اس میں کم سے کم چار سو افراد شریک تھے۔ دھماکے کے بعد کوئٹہ کے اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی۔

وزیر داخلہ بلوچستان سرفراز بگٹی نے حملے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ زرغون روڈ پر واقع چرچ پر دو خودکش بمباروں نے حملے کی کوشش کی تھی۔ ان میں سے ایک کو سکیورٹی اہلکاروں نے داخلی دروازے پر ہلاک کر دیا اور دوسرے نے زخمی ہونے کے بعد خود کو دھماکے سے اڑا دیا۔ اس دوران میں سیکورٹی فورسز اور دہشت گردوں میں فائرنگ کا بھی تبادلہ ہوا تھا۔

حکام نے بم دھماکے میں نو افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔ان میں تین خواتین بھی شامل ہیں۔ تیس افراد زخمی ہوئے ہیں، انھیں کوئٹہ کے سول اسپتال میں منتقل کردیا گیا ہے۔ان میں بچے اور خواتین بھی شامل ہیں۔ چار زخمیوں کی حالت تشویش ناک ہے، دیگر زخمیوں کو معمولی نوعیت کے زخم آئے ہیں۔ فوری طور پر کسی گروپ نے اس خودکش حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی ہے۔