.

سعودی عرب پر حوثیوں کے حملوں میں اضافہ امت مسلمہ کیلئے ناقابل قبول: پاکستان علماء کونسل

سعودی عرب کے فرمانروا ان کے ولی عہد کی دہشت گردی کے خلاف فکر کو پوری امت کی حمایت حاصل ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امت مسلمہ ارض الحرمین الشریفین مملکت سعودی عرب پر جارحیت اور دہشت گردی قبول نہیں کر سکتی ، سعودی عرب امت مسلمہ کا مرکز ہے اور سعودی عرب کے امن و سلامتی سے کھیلنے والے امت مسلمہ کے دشمن ہیں، حوثی باغیوں کے حملوں میں مسلسل اضافہ امت مسلمہ کیلئے ناقابل قبول ہے فوری طور پر اسلامی سربراہی کانفرنس اور سلامتی کونسل کا اجلاس بلایا جائے ایران کی طرف سے حوثی باغیوں کی امداد سوالیہ نشان ہے۔

یہ بات پاکستان علماء کونسل کے زیر اہتمام ملک بھر میں یوم احتجاج کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے علماء ، خطبا ، مقررین اور واعظین نے کہی ، پاکستان علماء کونسل کی ذیلی تنظیم وفاق المساجد پاکستان سے متصل ہزاروں مساجد میں ایک متفقہ قرارداد کے ذریعے سعودی عرب کی حکومت اور عوام کی مکمل تائید و حمایت کا اعلان کرتے ہوئے اقوام عالم سے حوثی باغیوں اور ان کے سر پرستوں کے خلاف فوری ایکشن کا مطالبہ کیا گیا۔ قرار داد میں ایرانی حکومت سے حوثی باغیوں کو میزائل فراہم کرنے کے الزام کی بھی وضاحت کرنے کا کہا گیا ، کراچی ، پشاور ، اسلام آباد ، کوئٹہ، حیدر آباد ، فیصل آباد، راوالپنڈی ، ملتان ، لاہور میں کیے جانے والے مظاہروں اور لاہور پریس کلب کے باہر پاکستان علماء کونسل لاہور کے زیر اہتمام عظیم الشان مظاہرہ سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان علماء کونسل کے مرکزی چیئرمین حافظ محمد طاہر محمود اشرفی ، مولانا اسد اللہ فاروق ، مولانا اسید الرحمن سعید، مولانا حاجی محمد طیب شاد قادری ، مولانا محمد اشفاق پتافی ، مولانا عبد اللہ رشیدی ، مولانا زبیر زاہد ، مولانا محمد اسلم قادری ، مولانا اسلام الدین ، مولانا محمد ایوب صفدر ، مولانا طاہر عقیل اعوان نے کہا کہ ارض الحرمین الشریفین سعودی عرب کے مختلف شہروں پر گذشتہ چار روز کے دوران متعدد مرتبہ حوثی باغیوں نے حملے کیے ہیں ، پاکستانی قوم سعودی عرب کی حکومت اور عوام کے ساتھ ہے اور سعودی عرب کی سلامتی و استحکام کیلئے ہزاروں نوجوان ارض مقدس جانے اور ارض مقدس کے دفاع کیلئے بے تاب ہیں، ہم سعودی عرب کی سلامتی اور استحکام کے اداروں اور فوج کو سلام پیش کرتے ہیں جو ارض الحرمین الشریفین کا دفاع کر رہی ہے لیکن بطور مسلمان ارض الحرمین الشریفین کے دفاع اور سلامتی کو اپنا فرض سمجھتے ہیں اور اس کیلئے ہر لمحہ تیار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ شام ،عراق ، یمن ، لیبیا کی تباہی کے بعد اب سعودی عرب کو نشانہ بنایا جا رہا ہے ، حوثی باغیوں اور ان کے سرپرستوں کا مقابلہ کیا جائے گا ، امت مسلمہ ارض الحرمین الشریفین کے امن سے کسی بھی قوت کو نہیں کھیلنے دے گی ، انہوں نے کہا کہ ایک سازش کے تحت مسلمانوں کے دلوں میں نفرت پیدا کرنے کیلئے سعودی عرب کی قیادت کے خلاف منفی پراپوگنڈہ کیا جا رہا ہے ، سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبد العزیز اور ان کے ولی عہد امیر محمد بن سلمان کی انتہاء پسندی ، دہشت گردی کے خلاف فکر کو پوری امت کی حمایت حاصل ہے ، انہوں نے کہا کہ اسلامی اور عربی ممالک میں بیرونی مداخلت کی وجہ سے آج مسلم امۃ تباہی کے دہانے پر پہنچ گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایران کو شام ، عراق ، یمن ، سعودی عرب اور دیگر اسلامی ممالک میں مداخلت بند کرنی چاہے ، امت مسلمہ کی بقاء اور سلامتی فرقہ وارانہ تشدد کے خاتمے ، اتحاد اور وحدت میں ہے، امت مسلمہ کی وحدت اور اتحاد ہی مسائل کا حل ہے ،مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ حوثی باغیوں نے عالمی قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے سعودی عرب کے شہری علاقوں کو نشانہ بنانا شروع کر رکھا ہے اور مستقبل میں حجاج اور زائرین کو بھی نشانہ بنانے کے خطرات موجود ہیں ، اس سے قبل داعش اور حوثی باغی مکتہ المکرمہ اور مدینہ منورہ پر حملہ کی کوششیں کر چکے ہیں ، انہوں نے کہا کہ پاکستان علماء کونسل کے تحت یکم اپریل کو اسلام آباد میں تحفظ حرمین الشریفین کانفرنس ہو گی۔ لاہور پریس کلب کے باہر ہونے والے مظاہرہ میں ہزاروں کی تعداد میں مظاہرین لبیک اللھم لبیک ، سعودی عرب سے رشتہ کیا ، لا الہ الا اللہ ، پاک سعودی عرب دوستی زندہ باد ، حوثی باغی اور ان کے سرپرست مردہ باد ، اسلامی ممالک میں بیرونی مداخلت بند کرو ، ارض الحرمین الشریفین پر ہماری جان بھی قربان ہے کے نعرے بلند کر رہے تھے۔