.

عاصم سلیم باجوہ کا بطور معاون خصوصی اطلاعات مستعفی ہونے کا فیصلہ

تنازع ختم کرنے کے لیے جنرل باجوہ نے یہ فیصلہ کیا: وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ریٹائرڈ لیفٹنٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ نے وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے اطلاعات کا عہدہ چھوڑنے کا اعلان کیا ہے۔

انھوں نے یہ اعلان پاکستان کے نجی ٹی وی چینلز 'اے آر وائے' اور 'جیو نیوز' کو دیے گئے انٹرویوز میں کیا ہے۔ تاہم ان کا کہنا تھا کہ وہ بطور چئیرمین سی پیک اتھارٹی اپنا کام جاری رکھیں گے۔

اس سے قبل لیفٹنٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ نے ٹویٹ کرتے ہوئے اپنے اور خاندان کے اوپر لگنے والے الزامات کی تردید کی تھی اور وضاحت جاری کی تھی۔

نجی ٹی وی چینلز سے گفتگو کرتے ہوئے عاصم سلیم باجوہ کا کہنا تھا کہ'انہوں نے اپنے خاندان کے ساتھ مشورے کے بعد فیصلہ کیا ہے کہ وزیر اعظم کے معاون خصوصی کے عہدے سے مستعفی ہوں اور اپنی پوری توجہ سی پیک اتھارٹی پر دیں۔'

انہوں نے مزید کہا کہ'وہ کل (جمعے) کو وزیر اعظم عمران خان کو اپنا استعفی پیش کریں گے اور ان سے درخواست کریں گے کہ ان کو صرف سی پیک اتھارٹی میں ہی کام کرنے دیں کیونکہ اس وقت سی پیک اتھارٹی میں بہت زیادہ توجہ چاہیے۔ انھوں نے کہا کہ "وزارت اطلاعات میں اور بھی قابل لوگ ہیں وہ کام میں ان کے لیے چھوڑوں گا اور میں اپنا فوکس ادھر (سی پیک پر) رکھوں گا۔"

قبل ازیں عاصم باوجوہ نے چند دن پہلے ایک ویب سائٹ پر چھپنے والی خبر کے حوالے سے چار صفحات پر مشتمل تردیدی بیان جاری کیا تھا۔ اپنے بیان میں ان کا کہنا تھا کہ وہ صحافی احمد نورانی کی خبر کی تردید کرتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ’انھوں نے عزت اور وقار کے ساتھ پاکستان کی خدمت کی ہے اور کرتے رہیں گے۔‘

یاد رہے کہ 27 اگست کو صحافی احمد نورانی کی جانب سے فیکٹ فوکس نامی ویب سائٹ پر ایک رپورٹ شائع کی گئی جس میں عاصم سلیم باجوہ کے خاندانی کاروباری معاملات پر بات کی گئی تھی۔ معاون خصوصی نے اپنے بیان میں کہا کہ ’الحمد اللہ میری ساکھ کو نقصان پہنچانے کی کوشش بے نقاب ہو گئی ہے۔‘

وفاقی وزیر اطلاعات کا موقف

ادھر اس حوالے سے وفاقی وزیر اطلاعات ونشریات سینیٹر شبلی فراز کا موقف بھی سامنے آ گیا جس میں انھوں نے کہا کہ وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے اطلاعات لیفٹننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ نے تنازع ختم کرنے کیلئے یہ فیصلہ لیا، جس کا ہم احترام کرتے ہیں۔

نجی ٹی وی چینل ’جیو‘ نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے شبلی فراز کا کہنا تھا کہ لیفٹننٹ جنرل (ر) عاصم باجوہ پروفیشنل اور ڈیسنٹ آدمی ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ عاصم سلیم باجوہ نے سرکاری طور پر ابھی اپنے مستعفی ہونے کے فیصلے سے آگاہ نہیں کیا۔

شبلی فراز نے کہا کہ عاصم سلیم باجوہ نے شاید حکومت کو، خود کو اور اپنے اہلِ خانہ کو ایسی صورتحال سے گزارنے کے بجائے یہ فیصلہ کیا۔ وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ عاصم سلیم باجوہ نے اس تنازع کو ختم کرنے کے لیے یہ فیصلہ کیا جس کی ہم عزت کرتے ہیں۔