پاکستان فٹ بال ٹیم کی کپتان ماریہ خان کی سعودی عرب کے شعلہ الشرقیہ کلب میں شمولیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے شعلہ الشرقیہ کلب نے پاکستان کی خواتین فٹ بال ٹیم کی کپتان ماریہ خان کے ساتھ رواں سیزن میں سعودی ویمنز پریمیئر لیگ کے لیے معاہدہ کیا ہے۔ان کی خدمات حاصل کرنے کا مقصد خواتین پریمیئرلیگ کے اس سیزن کے دوران میں سعودی عرب کی خواتین فٹ بال ٹیم کی صفوں میں معاونت کرنا ہے۔

امریکا میں پیدا ہونے والی 31 سالہ پاکستانی کھلاڑی کو گذشتہ سال نیپال میں ساؤتھ ایشین فٹ بال فیڈریشن (ساف) کے زیراہتمام ویمن فٹ بال چیمپیئن شپ کے انعقاد کے وقت پاکستان کی قومی خواتین ٹیم کا کپتان نامزد کیا گیا تھا۔

شعلہ الشرقیہ کے نام سے مشہور کلب نے پیغام رسانی کے پلیٹ فارم ایکس پر اعلان کیا کہ ’’ماریہ خان شعلہ الشرقیہ ایف سی کی صفوں میں شامل ہوگئی ہیں‘‘۔

وہ پہلی غیر ملکی خاتون پیشہ ور کھلاڑی ہیں جن کے ساتھ کسی سعودی کلب کی انتظامیہ نے معاہدہ کیا ہے۔ وہ اس سیزن کے لیے خواتین کی پریمیئر لیگ میں سعودی عرب کی قومی فٹ بال ٹیم کی معاونت کریں گی۔

شعلہ الشرقیہ فٹ بال کلب کی آفیشل ویب سائٹ کے مطابق یہ سعودی خواتین کی پہلی فٹ بال ٹیم ہے جو 2006 میں قائم ہوئی تھی اور 2020 اور 2021 میں مملکت کے مشرقی صوبہ کی چیمپیئن رہی ہے۔

رواں سال کے اوائل میں پاکستان کی قومی خواتین فٹ بال ٹیم نے کپتان ماریہ خان کی قیادت میں سعودی عرب کا دورہ کیا تھااور چار ملکی فٹ بال ٹورنامنٹ میں حصہ لیا تھا۔اس میں سعودی عرب کے علاوہ دوسری دو ٹیمیں کوموروس اور موریشس کی تھیں۔

پاکستانی ٹیم اس ٹورنامنٹ میں دوسرے نمبر پر رہی تھی جبکہ ماریہ خان نے فری کک پر سعودی عرب کے خلاف شاندار گول کردیا تھا جس کی بدولت پاکستان کا سعودی عرب کے خلاف میچ 1-1 سے برابررہا تھا۔ماریہ خان کے اس خوب صورت گول کو سوشل میڈیا پر خوب سراہا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں