صدر مملکت کی جانب سے کسی بھی وقت الیکشن کی تاریخ دیئے جانے کا امکان؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کسی بھی وقت الیکشن کی تاریخ کا اعلان کرسکتے ہیں۔

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے نگراں وزیر قانون احمد عرفان اسلم سے آئندہ عام انتخابات پر مشاورت کے لیے ایک اور ملاقات کی ہے جبکہ اس موضوع پر ان کی یہ دوسری ملاقات ہے۔

صدر مملکت اور وزیر قانون کے درمیان یہ ملاقات ایوان صدر اسلام آباد میں انتخابی عمل سے متعلق جاری مشاورتی عمل کے تسلسل میں ہوئی۔

سوشل میڈیا پلیٹ فارم ’ایکس‘ (سابق ٹوئٹر) پر پوسٹ کیے گئے ایک بیان میں صدر مملکت کے حوالے سے کہا گیا کہ اچھی نیت کے ساتھ مشاورتی عمل کا تسلسل ملک میں جمہوریت کے لیے مثبت ہو گا۔

صدر مملکت عارف علوی عہدے کی مدت مکمل ہونے کے بعد اب بھی آئندہ انتخابات پر عبوری حیثیت سے عہدے پر برقرار ہیں۔

نگران وزیر قانون سے ہونے والی حالیہ ملاقات اور سوشل میڈیا بیانات کی روشنی میں ذرائع ابلاغ میں تواتر سے یہ خبریں دیکھنے میں آ رہی ہیں کہ وہ [عارف علوی] الیکشن کی تاریخ کا اعلان کرنے پر تلے ہوئے ہیں۔ اگر ایسا ہو گیا تو ملک ایک بار پھر آئینی بحران کا شکار ہوسکتا ہے۔

ادھر صدر عارف علوی کو ان کی قانونی ٹیم، اٹارنی جنرل اور ماہر قانون یہ بات واضح طور پر بتا چکے ہیں کے الیکشن ایکٹ میں ترمیم کے بعد وہ الیکشن کی تاریخ کا اعلان نہیں کرسکتے۔

دریں اثنا پاکستان مسلم لیگ (ن) کی مرکزی سیکریٹری اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ ڈاکٹر عارف علوی صدارتی مدت پوری ہونے پر ایوان صدر خالی کرنے کی تاریخ دیں۔ اپنا بوریا بستر اٹھائیں اور پی ٹی آئی سیکریٹریٹ منتقل ہوجائیں کیونکہ یہ ریاستی ، معاشی دہشت گرد اور سازشی الیکشن نہیں صرف ملک میں معاشی سیاسی اور آئینی بحران چاہتے ہیں۔

قبل ازیں پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے صدر مملکت عارف علوی کو خط ارسال کیا گیا ہے جس میں اُن سے ملک میں فوری انتخابات کی تاریخ کے اعلان کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

پی ٹی آئی کے سیکریٹری جنرل عمر ایوب خان نے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کے نام ایک خط تحریر کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ دستور کا آرٹیکل 48(5) صدر کی جانب سے قومی اسمبلی کی تحلیل کی صورت میں صدر مملکت کو انتخابات کے انعقاد کے لئے 90 روز کی مدت کے اندر کی کسی تاریخ کے تعین کا پابند بناتا ہے۔

خط میں کہا گیا ہے کہ سپریم کورٹ آف پاکستان، سبطین خان بنام الیکشن کمیشن آف پاکستان اور پنجاب اور کے پی میں انتخابات کے انعقاد کے حوالے سے از خود نوٹس کے فیصلوں میں آئین کے اس آرٹیکل کی پوری صراحت سے تشریح کر چکی ہے، دستور اور سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں انتخابات کی تاریخ کا تعین صدر کا استحقاق اور اہم ترین آئینی فریضہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں