.

مسجد الفتح: فتح مکہ کی یادگار اور آرام گاہ رسول اللہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

حجاز مقدس میں اسلام کے دورِ اول کی مساجد میں مسجد حرام سے شمال میں 25 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع "مسجد الفتح" ان تاریخی اور یادگار مقامات میں سے ایک ہے جنہیں اسلام کی عظمت کی یادگار اور زمانہ رسول صلی اللہ علیہ وسلم چشم دید گواہ قرار دیا جاتا ہے۔

العربیہ نیوز چینل کی سلسلہ وار رپورٹ من الحرمین الشریفین میں "مسجد الفتح" کی تاریخی اہمیت پر روشنی ڈالی ہے۔ سنہ 08 ھجری کو حضور صلی اللہ علیہ وسلم 10 ہزار صحابہ کرام کے ہمراہ فتح مکہ کے لیے روانہ ہوئے۔ آپ مکہ شہر میں داخل ہونے سے قبل پچیس کلومیٹر دور کچھ دیر رُکے، جہاں آپ نے آرام فرمایا۔ بعد ازاں آپ لشکرِ اسلام کی قیادت کرتے ہوئے فاتحانہ مکہ معظمہ میں داخل ہوئے۔

جس جگہ آپ نے قیام اور آرام فرمایا، وہاں پرایک بڑی مسجد تعمیر کی گئی جسے"مسجد الفتح" کا نام دیا گیا۔ اس مسجد، اس کے آس پاس جہاں جہاں سے آپ کا گذر ہوا ان وادیوں اور نورانی پتھر کے بارے میں کئی افسانوی باتیں بھی مشہور ہیں۔

سعودی حکومت نے ان کی مکمل تحقیق کی اور ہزاروں مصادر و مراجع کا جائزہ لیا مگر زبان زد عام افسانوی روایات میں کوئی صداقت نہیں ملی۔