.

سعودی عرب: سر سے جڑی دو بچیوں کی کامیاب سرجری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے طبی ماہرین کی ایک ٹیم نے طویل کوشش کے بعد سر سے جڑی دو کم عمر بچیوں کی کامیاب سرجری کرتے ہوئے انہیں ایک دوسرے سے جدا کرنے کا مشکل مرحلہ سر کر لیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سر اور دماغ سے جڑی بچیوں السیامی السوری [ تقیٰ اور یقین] کو ایک دوسرے سے جدا کرنے کے لیے نیشنل گارڈز کے زیراہتمام شاہ عبدالعزیز میڈیکل سٹی کے شاہ عبداللہ اسپتال لایا گیا، جہاں ڈاکٹر احمد الفریان کی سربراہی میں 22 رکنی ٹیم نے 14 گھنٹوں پر محیط نہایت مشکل آپریشن چھ مراحل میں مکمل کیا۔

سرجڑی بچیوں کے آپریشن کی ٹیم کے انچارج نے سعودی پریس ایجنسی ’’واس‘‘ سے بات کرتے ہوئے اس انتہائی مشکل اور نازک سرجری کی تفصیلات بیان کیں۔ انہوں نے بچیوں کے کامیاب آپریشن پر خادم الحرمین شاہ سلمان بن عبدالعزیز، ولی عہد شہزادہ محمد بن نایف اور نایب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز سمیت تمام حکومتی عہدیداروں اور پوری قوم کو مبارک باد پیش کی۔ انہوں نے اپنی ٹیم کا بھی خصوصی شکریہ ادا کیا جس نے انتہائی مہارت اور محنت کے ساتھ اس مشکل آپریشن کو پایہ تکمیل تک پہنچانے میں ان کی مدد کی۔

بچیوں کے آپریشن کے مراحل کے بارے میں بات کرتے ہوئے ڈاکٹر الفریان کا کہنا تھا کہ تقیٰ اور یقین کے سرآپس میں جڑے ہوئے تھے اور ان کی سرجری ایک دو مراحل کا کام نہیں بلکہ چھ مراحل میں اسے پایہ تکمیل تک پہنچایا گیا۔ پہلے مرحلے میں دونوں بچیوں کو مکمل طور پر بے ہوش کیا گیا تا کہ وہ آپریشن کے تمام مراحل میں بے ہوش رہیں۔ دوسرے مرحلے میں سرجری کے مقام سے جلد اور دونوں جسموں میں مربوط ریشے ہٹا کر کھوپڑی کو کھولا گیا۔ تیسرے مرحلے میں مائیکرو اسکوپ کی مدد سے دونوں سروں کو ایک دوسرے کو جدا کرنے کا عمل شروع ہوا۔ اس مرحلے میں دونوں بچیوں کے باہم مربوط دماغ، شریانیں اور رگیں ایک دوسرے سے جدا کی گئیں۔

چوتھے مرحلے میں دونوں جسموں کو الگ کر کے نے بعد کھوپڑیوں کو واپس سر کے ساتھ جوڑا گیا۔ پانچویں مرحلے میں سرکی جلد دوبارہ اپنے مقامات پر رکھی گئی جبکہ آخری مرحلے میں آپریشن کی جگہ کی ڈریسنگ کے بعد انہیں آپریشن تھیٹر سے عام وارڈ میں منتقل کر دیا گیا۔