.

داعش نے موصل میں خصوصی فرد کو خودکش بمبار بنا دیا : ویڈیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے شمالی شہر موصل میں داعش کے جنگجو عراقی فورسز کے خلاف اپنی دفاعی جنگ میں کیا کیا حربے آزما رہے ہیں اور کس قدر سفاکیت کا مظاہرہ کررہے ہیں،اس کا اندازہ ان کی انٹرنیٹ کے ذریعے گاہے گاہے منظرعام پر آنے والی ویڈیوز سے بخوبی کیا جاسکتا ہے۔

داعش کی ایسی ہی ایک نئی ویڈیو فوٹیج منظرعام پر آئی ہے۔اس سے پتا چلتا ہے کہ انھوں نے ایک خصوصی فرد کو مغربی موصل میں عراقی سکیورٹی فورسز کے خلاف لڑائی میں کیسے خودکش بمبار بنا دیا تھا۔اس شخص کو تو خود دوسروں کی توجہ اور دیکھ بھال کی ضرورت تھے لیکن داعش نے اس کو مقاصد کے لیے استعمال کرنے کی کوشش کی۔

العربیہ کے سسٹر چینل الحدث کو ملنے والی اس ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ عراقی فورسز کے اہلکار کیسے اس شخص پر براہ راست گولی چلانے سے گریز کررہے ہیں اور وہ اس کو خبردار کرنے کے لیے ہوائی فائرنگ کررہے ہیں۔

واضح رہے کہ عراقی فورسز کی موصل کے مغربی حصے کی بازیابی کے لیے داعش کے خلاف فیصلہ کن جنگ میں ہزاروں شہری سخت مصائب سے دوچار ہیں اور داعش انھیں اپنے دفاع میں انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرنے سے بھی گریز نہیں کررہے ہیں جبکہ موصل کے یہ باسی ’’آسمان سے گرا کجھور میں اٹکا‘‘ کے مصداق امریکا کی قیادت میں داعش مخالف فوجی اتحاد اور عراقی فوج کے فضائی حملوں میں بھی نشانہ بن رہے ہیں۔

اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوٹیریس نے موصل کے عوام کے ان ہی مصائب اور مشکلات کے پیش نظر عالمی برادری سے ان کے لیے مزید امداد بھیجنے اور ان سے اظہار یک جہتی کی اپیل کی ہے۔

انھوں نے جمعے کو داعش مخالف جنگ میں بے گھر ہونے والے عراقی مہاجرین کے کیمپ حسن شام کے دورے کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’’ ہمیں ان لوگوں کی امداد کے لیے درکار وسائل دستیاب نہیں ہیں اور عالمی برادری کی جانب سے ان لوگوں کے لیے درکار یک جہتی کا اظہار بھی نہیں کیا گیا ہے‘‘۔

انھوں نے کہا کہ ’’ بدقسمتی سے (عراقی مہاجرین کے لیے) ہمارے پروگرام کو صرف 8 فی صد فنڈز مہیا کیے جارہے ہیں۔اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ہمارے وسائل کتنے محدود ہیں‘‘۔