.

فضائی آلودگی کے سبب سالانہ 17 لاکھ افراد گردے کے امراض میں مبتلا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایک جدید امریکی طبّی تحقیق میں خبردار کیا گیا ہے کہ فضائی آلودگی ہر سال پوری دنیا میں 17 لاکھ افراد کو گردے سے متعلق مزمن امراض میں مبتلا کرنے کا سبب بنتی ہے۔

اس تحقیق کو گردے کے امراض سے متعلق امریکی سوسائٹی نے اتوار کے روز جاری کیا۔

امریکا کے شہر سینٹ لوئس میں طبی محققین نے انکشاف کیا کہ فضا میں باریک ذرات کی سطح میں اضافے کا گردے کے مزمن امراض کے خطرے کے ساتھ گہرا تعلق ہے۔

تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ جغرافیائی لحاظ سے گردوں کے مریضوں سے متعلق اعداد و شمار میں نمایاں فرق ہے تاہم ان امراض میں مبتلا ہونے کی بلند ترین شرح امریکا اور جنوبی ایشیا میں ہے۔

فضائی آلودگی کو کئی امراض کا سبب بننے کے حوالے سے خطرناک عامل شامل کیا جاتا ہے۔ ان میں دل اور پھیپھڑوں کے امراض کے علاوہ سرطان ، حرکت قلب بند ہو جانا اور ذیابیطس شامل ہے۔

سال 2016 میں عالمی بینک کی جانب سے جاری ایک رپورٹ کے مطابق فضائی آلودگی دنیا بھر میں ہر 10 میں سے 1 شخص کی وفات کا سبب بنتی ہے جس کے باعث یہ بین الاقوامی سطح پر 4 خطرناک ترین عوامل میں شمار کی جاتی ہے۔ البتہ تیسری دنیا کے ممالک میں فضائی آلودگی خطرناک ترین عامل ہے جہاں یہ 93% اموات یا غیر مہلک امراض کا سبب ہے۔